عالمی ادارہ صحت کی تجاویز پر عملدرآمد ضروری نہیں، ڈاکٹر ظفر مرزا

ظفر مرزا
Loading...

اسلام آباد: وزیراعظم کے معاون خصوصی صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے عالمی ادارہ صحت کے خط پر ردعمل میں کہا ہے کہ عالمی ادارہ صحت کی تجاویز پر عملدرآمد ضروری نہیں۔

عالمی ادارہ صحت کے مراسلے کے حوالے سے ایک بیان میں ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہا کہ ہم نے اپنے عوام کے بہترین مفاد میں بہترین خود مختار فیصلے کئے ہیں اور کورونا وائرس کے معاملے پر سوچی سمجھی حکمت عملی اپنائی، ڈبلیو ایچ او نے صرف وبا کو دیکھنا ہوتا ہے، ڈبلیو ایچ او کی تجاویز پر عملدرآمد ضروری نہیں، پاکستان اس وبا سمیت صحت کے شعبے میں عالمی ادارہ صحت کے ساتھ دیرینہ شراکت داری کو اہمیت دیتا ہے۔

سندھ حکومت کا کرونا سے نمٹنے کیلیے مزید 5 اسپتال قائم کرنے کا فیصلہ

ڈاکٹر ظفر مرزا کا کہنا تھا کہ ایس اوپیز پر عمل کرنا ہماری اولین ترجیح ہے، کورونا وائرس کے ساتھ زندگی کو بھی چلانا ہے، کوئی پتہ نہیں وائرس کتنا عرصہ رہنا ہے، جو سیکٹرز بند ہیں وہ بندہی رہیں گے، عوام نے سمجھا کورونا عید کے بعد ختم ہوجانا ہے اور احتیاط نہ کی، آنے والے دنوں میں کورونا کے کیسز بڑھتے ہوئے نظر آرہے ہیں، عوام کے لیے جو بہتر ہے وہ فیصلہ کرتے ہیں، حکومت کے پاس لاک ڈائون کا آپشن موجود ہے۔

Loading...

واضح رہے کہ علمی ادارہ صحت نے پاکستان میں لاک ڈاؤن کی نرمی سے متعلق تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ یکم اور 22 مئی کو پابندیاں اس وقت اٹھائی گئیں جب ملک اس فیصلے کے لیے بنیادی تقاضوں پر پورا نہیں اترتا تھا۔

(Visited 38 times, 1 visits today)
Loading...
Advertisements

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں