آج کل

آئمہ بیگ کا انٹرویو

‘کسی کے لباس سے اس بات کا تعین نہیں کیا جاسکتا کہ وہ شخص مسلمان نہیں’

لاہور: گلوکارہ آئمہ بیگ کا انٹرویو میں کہنا ہے کہ کسی کا ظاہر دیکھ کر اس کے ایمان پر سوال نہیں اٹھایا جاسکتا اور نہ ہی کسی کے لباس سے اس بات کا تعین کیا جاسکتا کہ وہ مسلمان ہے یا نہیں۔

اسد خٹک نے وینا ملک سے شادی کی وجہ بتا دی

فلم ’نامعلوم افراد‘ اور ’طیفہ ان ٹربل‘ سمیت متعدد فلموں اور کوک اسٹوڈیو میں اپنی آواز کا جادو جگانے والی آئمہ بیگ اپنی گلوکاری کی وجہ سوشل میڈیا پر فعال رہتی ہیں تاہم صارفین ان کی گائیگی سے ہٹ کر ان کے فیشن میں دلچسپی رکھتے ہیں کیوں کہ نوجوان گلوکارہ فیشن آئیکون بھی سمجھی جاتی ہیں اور اکثر اپنے لباس کی وجہ سے تنقید کی زد میں رہتی ہیں۔

ایک انٹریو میں جب ان کے لباس سے متعلق سوال پوچھا گیا کہ ’’انہیں کیسا لگتا ہے جب سوشل میڈیا پر ان کی تصاویر پر کوئی کمنٹ میں یہ پوچھتا ہے کہ کیا آپ مسلمان ہیں ؟

سوال کے جواب میں آئمہ بیگ کا انٹرویو کہنا تھا کہ میرے خیال میں آپ کسی کے ایمان پر سوال نہیں اٹھاسکتے، کسی کو یہ نہیں پتہ کہ میرا اللہ کے ساتھ کیا تعلق تھا، ہے یا پھر رہے گا، میں اپنی زندگی میں کن چیزوں سے گزری ہوں اور کن چیزوں نے مجھے میرے رب کے قریب کرکے میرا ایمان مضبوط کیا، یہ صرف میں جانتی ہوں۔

گلوکارہ نے کہا کہ اپنے اندر سے میں بخوبی واقف ہوں لیکن میں کسی کو کھول کر نہیں دکھاسکتی کہ میرا رب کے ساتھ کیا تعلق ہے جب کہ کسی کے لباس سے اس بات کا تعین نہیں کیا جاسکتا کہ وہ شخص مسلمان نہیں ہے، یہ کہنا بہت آسان ہے کہ آپ مسلمان نہیں کیوں کہ آپ نے مسلمانوں والا لباس نہیں پہنا۔

ایک اور سوال کے جواب میں آئمہ بیگ کا انٹرویو میں کہنا تھا کہ لوگوں کا ایک ذہن بن چکا ہے کہ مسلمانوں کو ایسا لباس پہننا چاہیے اور وہ ہر ایک کو اسی لباس میں دیکھنا چاہتے ہیں جب کہ اسلام بہت پرامن مذہب ہے، اسلام میں کچھ لوگوں کو جو فساد دکھائی دیتا ہے وہ حقیقت نہیں بلکہ معاشرے کے ایک طبقے کی جانب سے پیدا کردہ ہے۔

گلوکارہ نے انکشاف کیا کہ میرا تعلق ایک مذہبی گھرانے سے ہے اور جب میں نے اپنے والد کو یہ بتایا کہ میں گلوکارہ بننا چاہتی ہوں تو میرے والد نے مجھے کہا، اپنے نام کے آگے سے بیگ ہٹا دینا۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *