کرونا وائرس کی ایک اور نئی علامت سامنے آگئی…. ؟

ماہرین نے
Loading...

اب تک کرونا وائرس کی کئی علامات سامنے آچکی ہیں. ان تمام علامتوں میں سے کرنا وائرس کی سب سے عام علامت نزلہ, بخار, گلے کی خرابی اور سونگھنے اور چکھنے کی حس کا متاثر ہونا ہے.

لیکن اب ماہرین نے خبردار کیا ہے کہ مسلسل ہچکیاں آنا بھی کرونا وائرس کی علامت ہوسکتی ہے. ماہرین کا کہنا ہے کہ انھوں نے چند روز پہلے ایک مریض کا مطالعہ کیا جو مسلسل 4 دن سے ہچکی بند نہ ہونے کی وجہ سے ہسپتال میں داخل تھا.

ماہرین کا کہنا ہے کہ مریض کو ہچکیوں کے علاوہ اور کوئی مسئلہ یا کرونا وائرس کی کوئی علامت ظاہر نہیں تھی. لیکن جب ڈاکٹرز نے اس مریض کا ایک ایکسرے کیا تو انہیں معلوم ہوا کہ اس کے پھیپھڑے کافی حد تک خراب ہو چکے تھے. اور اس کے پھیپھڑوں سے خون بھی جاری تھا.

Loading...

اس مریض کا کہنا تھا کہ وہ پہلے کبھی بھی پھیپھڑوں کے کسی مرض میں مبتلا نہیں ہوا پھیپھڑوں کی حالت سامنے آنے کے چند دن بعد یہ مریض بخار میں مبتلا ہوگیا پھر جب ڈاکٹرز نے اس کا کرونا ٹیسٹ کیا تو وہ مثبت آیا.

کرونا کے ایسے مریض دوسروں کے لیے زیادہ خطرناک ثابت ہو رہے ہیں …؟

ڈاکٹروں کا کہنا تھا کہ مریض کا مکمل معائنہ کرنے کے بعد ہمیں یہ اندازہ ہوا کہ اس کے پھیپھڑوں میں سوزش کی وجہ سے مریض کی ہچکیاں 4 دن سے بند نہیں ہورہی تھیں. ماہرین کا یہ بھی کہنا ہے کہ اب تک کرونا  کے ایسے صرف دو ہی مریض سامنے آئے ہیں. ان کا کہنا ہے کہ سب سے اہم بات یہ ہے کہ آئے دن کرونا وائرس کی نئی نئی علامات سامنے آنا خطرے کی بات ہے اور اس بات کی ضرورت ہے کہ کرونا وائرس پر مزید تحقیقات جاری رکھی جائیں.

(Visited 40 times, 1 visits today)
loading...
Advertisements

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں