استاد کو مشورہ دنیا منہگا پڑ گیا،مگر کس کو؟

ایران

واشنگٹن : ایران بھی امریکا کے 52 مقامات کو نشانہ بنائے، بھارتی نژاد پروفیسر کا امریکا میں بیٹھ کر ایران کو مشورہ دینا مہنگا پڑگیا۔

تفصیلات کے مطابق امریکا کی جانب سے ایران کو دی گئی دھمکی پر بھارتی نژاد امریکی پروفیسر کے مذاق میں ایران کو جوابی کارروائی کا مشورہ دینے پر نوکری سے ہاتھ دھونا پڑگیا، پروفیسر نے ایران کو 52 امریکی مقامات کو نشانہ بنانے کا کہا تھا۔

پروفیسر اشین فانسے نے فیس بُک پر ایک پوسٹ شیئر کی، جس میں انہوں نے امریکی صدر کی ایران کو دی گئی دھمکی کے رد عمل میں لکھا کہ ایران کو بھی جوابی کارروائی میں امریکا کے 52 مقامات کو بم سے نشانہ بنانا چاہیے، جیسا کہ ‘امریکی شاپنگ مالز یا اداکارہ کم کارڈیشن کا گھر’۔

اس پوسٹ پر کالج کی جانب سے پروفیسر کو یہ کہہ کر فارغ کر دیا گیا تھا کہ فیس بُک پر اس قسم کا بیان ان کی ذاتی رائے ہے اور کالج کا اس پوسٹ سے کوئی تعلق نہیں۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق کالج میں پروفیسر اور ایک ڈیپارٹمنٹ کے ڈائریکٹر کی حیثیت سے گزشتہ 15 برس سے فرائض انجام دینے والے اشین فانسے نے بعد ازاں اپنی اس پوسٹ کو ایک نا مناسب طنز قرار دیتے ہوئے معافی بھی مانگی تھی۔

ان کا کہنا تھا کہ انہوں نے اپنے ایک دوست کے ساتھ فیس بُک پر مذاق میں یہ پوسٹ کی تھی، جسے غلط رنگ دیا گیا ہے، میں امید کرتا ہوں کہ کالج انتظامیہ اس معاملے پر نظر ثانی کرے گی۔

پروفیسر کے بیان پر کالج انتظامیہ کی جانب رد عمل دیتے ہوئے کہا گیا کہ کالج کسی بھی قسم کی نفرت انگیز اور دھمکی آمیز الفاظ اور ارادوں کی مذمت کرتا ہے۔اور استاد کو مفت کا مشورہ دینا منہگا پر گیا.

(Visited 23 times, 1 visits today)

Comments

comments

aajkalpk, America, international, Iran,

اپنا تبصرہ بھیجیں