دنیا کا خوش قیسمت ترین انسان…..مگرمچھوں کے منہ سے واپس آ گیا وہ بھی زندہ

آسٹریلیا
Loading...

سڈنی: آسٹریلیا میں ایک ایسا شخص بھی ہے جو جنگل میں 3 ہفتوں تک مگرمچھوں کے گرد بھٹکتا رہا اور خوش قسمتی سے ان کا نوالا بننے سے بچ گیا۔

ایسا کم ہی دیکھنے میں آیا ہے کہ آدم خور مگر مچھ نے کسی بھی انسان یا جانور کو بھوک میں اپنا نوالا نہ بنایا ہو، لیکن آسٹریلیا میں ٹینٹری نامی جنگل سے ایک ایسا شہری بچ کر آیا جہاں مگر مچھوں کا بسیرا ہے۔
سڈنی: آسٹریلیا میں ایک ایسا شخص بھی ہے جو جنگل میں 3 ہفتوں تک مگرمچھوں کے گرد بھٹکتا رہا اور خوش قسمتی سے ان کا نوالا بننے سے بچ گیا۔

ایسا کم ہی دیکھنے میں آیا ہے کہ آدم خور مگر مچھ نے کسی بھی انسان یا جانور کو بھوک میں اپنا نوالا نہ بنایا ہو، لیکن آسٹریلیا میں ٹینٹری نامی جنگل سے ایک ایسا شہری بچ کر آیا جہاں مگر مچھوں کا بسیرا ہے۔

ملکی خبررساں ادارے کے مطابق میلن لیمک نامی شہری تین ہفتوں قبل جنگل میں بھٹک گیا تھا، بعد ازاں گھر والوں سمیت ریسکیو عملے کو بھی اس بات کا انداز تھا کہ اب وہ زندہ نہیں بچے گا کیوں کہ جان لیوہ جانور اسے اپنی خوراک بنا لیں گے۔

loading...

تاہم تمام ترقیاس آرائیاں غلط ثابت ہوئیں اور شہری خوش قسمتی سے بچ نکلا، 29 سالہ شہری کا تین ہفتوں تک جنگلی جانورں کے بیچ زندہ رہنا کسی معجزے سے کم نہیں کیوں کہ یہ عام بات ہے جو ٹینٹری جنگل میں گم ہوا تو اس کی لاش ہی واپس آتی ہے۔ تاہم میلن لیمک ان بدنصیبوں میں شامل نہیں ہیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ متاثرہ شخص لاپتہ ہونے والی مقام سے کئی کلو میٹر دور پائے گئے، تاہم وہ صحیح سلامت اور خطرے سے باہر ہے لیکن جسموں پر معمولی خراشیں آئی ہیں۔مگر جان سے بچ گیا ہے

(Visited 116 times, 1 visits today)
Loading...
Advertisements

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں