آپ اس طرح بھی کرونا وائرس کا شکار ہوسکتے ہیں….!

وائرس سے صحت یاب
Loading...

کرونا وائرس سے بچنے کے لئے اب تک ہم ماہرین سے یہی سنتے آئے ہیں کہ احتیاطی تدابیر اختیار کریں اور اس کے علاوہ لوگوں سے میل جول میں فاصلہ رکھیں. اگر ہم نے ایسا نہ کیا تو ہم کرونا وائرس کا شکار ہو سکتے ہیں.

لیکن اب ماہرین نے کرونا وائرس کے متعلق ایک اور حیران کن انکشاف کیا ہے. ماہرین کا کہنا ہے کہ آپ اونچا بولنے سے بھی کرونا وائرس میں مبتلا ہوسکتے ہیں. یعنی جب کوئی شخص اونچی آواز میں بولتا ہے تو اس کے منہ سے بات کرنے کے دوران چھوٹے چھوٹے ذرات نکلتے ہیں یہ ذرات 10 منٹ سے زائد فضا میں موجود رہتے ہیں. اس طرح یہ کسی بھی دوسرے شخص میں آسانی سے منتقل ہوسکتے ہیں اور وہ بھی کرونا وائرس کا شکار ہو سکتا ہے.

فرانس کے خبر رساں ادارے اے ایف پی کا کہنا ہے کہ امریکہ کے شوگر اور گردے کے امراض کے نیشنل انسٹی ٹیوٹ میں ریسرچ کی گئی. ریسرچ کے اس عمل میں ایک شخص کو ایک بند ڈبے میں بھیجا گیا اور اس کو کہا گیا کہ وہ 25 سیکنڈ تک زور زور سے یہ بولے کے صحت مند رہیں.

25 سیکنڈ بعد جب اس شخص کو ڈبے سے باہر نکالا گیا اور اس ڈبے کا جائزہ لیا گیا تو معلوم ہوا کہ اس شخص کے اونچا بولنے سے 12 منٹ تک کرونا وائرس کے ذرات دار ہے.

Loading...

کرونا وائرس سے بچنے کے لئے امریکن ماہرین کا نیا مشورہ ….؟

یہ ریسرچ امریکن نیشنل اکیڈمی آف سائنس کے جریدے میں شائع کی گئی ہے. اس ریسرچ سے یہ بات ثابت ہوئی کہ اونچی آواز میں بات کرنے سے وائرس کے ذرات زیادہ تعداد میں منہ سے باہر نکلتے ہیں.

Photo: File

اگر ہلکی آواز میں بات کی جائے تو یہ ذرات کم تعداد نے باہر آئیں گے. لہذا ماہرین کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس میں مبتلا کسی بھی شخص کو چاہیے کہ وہ بات کرے اور ماسک کا استعمال لازمی کرے تاکہ دوسروں کو بھی اس وائرس سے محفوظ رکھ سکے.

واضح رہے دنیا بھر میں 43 لاکھ سے زائد افراد کو متاثر اور 2 لاکھ 97 ہزار سے زائد اموات کا سبب بننے والا مہلک کورونا وائرس پاکستان میں تیزی سے پھیل رہا ہے اور اب تک ملک میں مجموعی طور پر 36 ہزار 546 کیسز سامنے آچکے ہیں جبکہ 779 اموات بھی ہوچکی ہیں۔

(Visited 46 times, 1 visits today)
Loading...
Advertisements

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں