اگر ہاتھ نہ دھوئیں تو پھر جسم میں کیا تبدیلیاں آتی ہیں؟

چین سے مختلف ممالک میں پھیلنے والے نئے کورونا وائرس کی وبا سے بچنے کا سب سے آسان طریقہ ہاتھوں کی درست طریقے سے صفائی ہے۔

عالمی ادارہ صحت نے نوول کورونا وائرس کی روک تھام سے بچاﺅ کے لیے جو ہدایات جاری کی ہیں، ان میں کہا گیا ہے کہ لوگوں کو اپنے ہاتھ اکثر صابن اور پانی سے دھونے چاہئیں۔

روزانہ ایک انڈہ کھانا صحت کیلئے فائدہ مند ہے، طبی تحقیق

درحقیقت یہ عادت صرف کورونا وائرس سے ہی نہیں بلکہ متعدد دیگر بیماریوں سے بھی بچانے میں مدد دیتی ہے۔

یہ بات برسوں پہلے سامنے آچکی ہے کہ ہاتھوں کو دھونے سے بیمار ہونے کا خطرہ کم کیا جاسکتا ہے اور ایک تحقیق میں بتایا گیا تھا کہ اگر ہاتھوں کو اکثر دھونا عادت بنالیا جائے تو ہر سال 10 لاکھ زندگیاں بچائی جاسکتی ہیں۔

مگر اس کے برعکس اگر آپ ہاتھوں کو دن میں ایک یا 2 بار ہی دھوتے ہیں تو کورونا وائرس کے تو شاید ہی دور ہونے کا امکان ہے مگر اس کے جو اثرات جسم پر مرتب ہوں گے، وہ چونکا دینے والے ہیں۔

جراثیموں کی دیگر افراد میں منتقلی

اگر آپ ہاتھ نہیں دھوئیں گے تو ان پر جراثیم چپک جاتے ہیں، جو آپ اپنے دوستوں اور گھر والوں میں منتقل کرکے انہیں بیمار کرسکتے ہیں۔ ہاتھوں سے یہ جراثیم دروازے کی ناب یا ریلنگ پر منتقل ہوسکتے ہیں اور وہاں سے بھی لوگوں کو انفیکٹ کرسکتے ہیں، لہٰذا جب بھی واش روم جائیں تو اپنے ہاتھوں کو اچھی طرح دھوئیں۔

آپ خود بھی بیمار ہوسکتے ہیں

وہ تمام جراثیم جو ہاتھوں پر آتے ہیں، وہ چھونے سے آنکھوں اور منہ کے راستے جسم کے اندر جاسکتے ہیں اور یہ امراض سنگین بھی ہوسکتے ہیں، صابن سے ہاتھ دھونا ہیضے، نظام تنفس کے انفیکشن اور دیگر سے تحفظ فراہم کرسکتا ہے۔

(Visited 43 times, 1 visits today)

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں