یہ باوقار شخصیت کے مالک اور بارُعب ہستی آخر ہیں کون؟

Loading...

آج میں جس عظیم انسان کے بارے میں لکھنا چاہ رہی ہوں وہ ایک باہمت با کردار با حیا اور اپنی مثال آپ ہیں. اگر میں اپنے ماضی یا حال پر نظر ڈالوں تو ہمارے ملک کا ایک وطیرہ رہا ہے ۔ کہ ہم لوگ جو اس دنیا سے نامور لوگ چلے جاتے ہیں انکی تعریفوں میں زمین آسمان ایک کر دیتے ہیں مگر انکی زندگی میں انکی موجودگی میں ان سے فائدہ یا رہنمائی حاصل کرنی کی کوشش نہیں کرتے ۔ لیکن میں یہ غلطی نہیں کرنا چاہوں گی اور ایک عظیم شخصیت کے بارے میں آپ سب کو بتانا چاہوں گی ۔ جو کہ آج کل کے بے حس معاشرے میں اپنی اعلی صفات کی وجہ سے اپنا ثانی نہیں رکھتی ہے،  اگر سیاست کے حوالے سے بات کروں تو کم سے کم مجھے تو نہیں لگتا کہ ان سے بہتر کوئی سیاست کو سمجھتا ہو گا آگے سب کی اپنی اپنی رائے ہے میں جس شخصیت کو لیکر اتنی پر جوش ہوں وہ ہیں چوہدری غلام حسین صاحب

چوہدری صاحب نے 22 دسمبر 1955 دسمبر کو ایک غریب گھرانے میں آنکھ کھولی ۔ آپ کے والد مرحوم کھیتی باڑی کرتے تھے ۔ آپ چھ بہن بھائی ہیں اور آپکا دوسرا نمبر ہے ۔ آپ کے خاندان والے کھیتی باڑی کیا کرتے تھے اور آپ بھی اسی پیشے سے منسلک ہو جاتے، مگر قدرت کو کچھ اور ہی منظور تھا ۔ اور آپ نے اچانک پڑھنے کا ارادہ کر لیا ان کے بچین کا ایک قصہ یاد آ رہا ہے۔

چوہدری صاحب بتاتے ہیں کہ انکی والدہ مرحومہ نے انکو سکول داخل کروایا تو آپ پڑھائی چھوڑ کر بھاگ گئے کہ یہ انکے بس کی بات نہیں اس زمانے میں گاوں کی زندگی بہت سادہ تھی اور شہر میں بھی زیادہ سہولتیں نہیں تھیں آپ ایک دن اپنی والدہ کے ساتھ شہر آئے تو آپ نے گاڑیاں چلتے دیکھیں تو آپ نے والدہ مرحومہ سے پوچھا کہ بے بے ( ماں ) یہ کن کو ملتی ہیں آپکی والدہ نے کہا یہ ان لوگوں کو ملتی ہیں جو پڑھ کر بڑے آدمی بن جاتے ہیں اسی وقت آپ نے پڑھنے کا ارادہ کر لیا اور گاؤں جا کر سکول میں داخلہ لے لیا اور پھر آپ نے گریجویشن تک تعلیم حاصل کی، بغیر کسی ٹیوشن اور راہنمائی کے،آپ نے اپنی تعلیم مکمل کی ۔

چوہدری صاحب کو زمانہ طالب علمی میں ہی سیاست کا شوق ہو گیا ۔ آپ شروع میں بھٹو کی جماعت کے ساتھ منسلک رہے یوں آپکے سیاسی کیریئر کا آغاز ہوا ۔

چوہدری صاحب مارشل لا کے دور میں ضیاء الحق مرحوم کے کافی قریب رہے ۔ اور ملکی سیاست پر متعدد بار ان کو مفید مشورے دیئے ۔ جس سے ضیا الحق مرحوم کو حکومت جمانے میں کافی آسانی ہوئی ۔ جسکا اعتراف کئی بار ضیاءالحق نے خود بھی کیا ۔ چوہدری صاحب کا سیاسی دور طویل اور کھٹن بھی رہا کیونکہ آپ نے ہمیشہ حق اور سچ کا ساتھ دیا ۔ آپکا اپنااخبار ” سیاسی لوگ ” بہت کم عرصے میں بہت زیادہ شہرت کمانے لگ گیا تھا ۔  اور بڑے بڑے سیاست دان اور حکومت عہدیدار ان سے ڈرتے تھے ۔ کہ کہیں ان کے کالے کارنامے لوگوں کے سامنے نہ آ جائیں ۔ چوہدری صاحب پر زبانی کلامی حملے تو ہر دور میں ہوۓ مگر نواز شریف کے پہلے دور حکومت میں آپ نے جب ان کے کالے کارناموں کا ذکر کیا تو اس نے اپنے غنڈے بھیج کر آپکو خاموش رہنے کی دھمکی دی ۔ مگر آپ نے ڈر جانا تو سیکھا ہی نہیں۔
آپ نے اگلے ہی دن اپنے اخبار کی مین ہیڈ لائن پر لکھا کہ

Loading...

” مارنے والے سے بچانے والا زیادہ طاقتور ہے “

اور اپنے موقف پر ڈٹ گئے۔

چوہدری صاحب نے ہمیشہ حق کی بات کی۔ غریب عوام کی بات کی ہے۔ آپ ہر دور میں ہر حکومت کو کہتے ہیں کہ ” غریب کی بات کی جائے غریب عوام کی زندگیوں میں خوشحالی لائی جائے پھر ہی ملک کے مسائل حل ہوں گے “.

چوہدری صاحب کے موقف کی تائید تو ہر سیاست دان ہی کرتا ہے مگر حکومت ملتے ہی وہ پٹری سے اتر جاتا ہے ۔ اور عوام کو بھگتنا پڑتا ہے۔

یہ تو تھی سیاسی زندگی پر ایک نظر۔ اب چوہدری صاحب کی نجی زندگی پر نظر ڈالتے ہیں۔ آپ کے دو صاحبزادے اور تین صاحبزادیاں ہیں۔ آپ نے زندگی نہایت سادہ مگر پروقار طریقے سے گزاری ہے اور گزار رہے ہیں ماشاء اللہ ۔ آپ کی اعلی ترین  خصوصیات میں جھوٹ نہ بولنا ، غیبت نہ کرنا امیروں غریبوں کے ساتھ یکساں سلوک کرنا شامل ہیں ۔ مگر جس خصوصیت نے مجھے بے حد متاثر کیا وہ انکی قوت ایمان ۔ یعنی رب کائنات پر پختہ یقین ہے ۔ زندگی نے انکو کئی نشیب و فراز دکھائے جن میں قید و بند کی صعوبتوں سے لیکر مالی تنگی جیسے مسائل شامل رہے مگر میں نے انکو ہر موقع پر چٹان کی طرح مضبوط پایا۔
مشہور قول ہے کہ
کوئی آپ کے ہاتھ سے تو چھین کر لے جا سکتا ہے مگر قسمت سے نہیں۔

ان کی خاص خوبی یہ ہے کہ چوہدری صاحب نے کبھی کسی سے بدلہ لینے کا ارادہ نہیں کیا ۔ بلکہ اپنا ہر معاملہ اللہ کے سپرد کیا ہے ۔
چوہدری صاحب کی اگر خوراک کی بات کی جائے تو وہ نہایت سادہ اور غزائیت سے بھرپور ہوتی ہے ۔ آپ کو رب کی بنائی سبزیاں ، پھل پسند ہیں ۔ آپکو مصنوعی خوراک برگر پیزا ناپسند ہیں ۔ آپکو گوشت میں مچھلی نہایت مرغوب ہے ۔
آپ ڈرائی فروٹ کے بھی دلدادہ ہیں ۔
چوہدری صاحب کی ایک اور منفرد اور خاص بات یہ ہے کہ انکو کسی بھی قسم کا نشہ بہت برا لگتا ہے ۔ آپ عام سیاست دانوں سے بہت مختلف ہیں آپ نے اپنی تمام زندگی میں شراب، سگریٹ ، پان وغیرہ کو ہاتھ تک نہیں لگایا ۔ آپ کی شخصیت خداداد صلاحیتوں سے بھوپور ہے ۔آپ نہایت شریف اور معتبر انسان ہیں آپ پکے رب کو ایک ماننے والے اور سچے عاشق رسول ہیں ۔
آخر میں بس میں اتنا ہی کہنا چاہوں گی کہ اگر چوہدری صاحب ملک کے وزیر اعظم بن جائیں یا اہم حکومتی عہدے پر آ جائیں تو میرا یقین ہے  کہ انشاءاللہ ملک کی تقدیر بدل دیں گے ۔ کیونکہ وہ جس بھی شعبے میں گئے چھا گئے ۔ جیسا کہ آج ملکی اینکرز میں سرفہرست انکا نام ہے ۔
میری دعا ہے کہ اللہ پاک آپکو خوشیوں سے بھرپور لمبی زندگی عطا فرمائیں اور آپ یونہی ملک و قوم کی خدمت کرتے رہیں ۔ آمین یا رب  العالمین ۔

(Visited 2,226 times, 1 visits today)
Loading...
Advertisements

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں