عالم کی فضیلت …..!

Loading...

عالم دین کو اللہ تعالی نے وہ بادشاہی دی جو لوگوں کے دلوں پر بھی راج کرتے ہیں۔ ہارون الرشید ایک نیک اور دیندار بادشاہ تھا، ایک مرتبہ کسی جگہ سفر پر جارہا تھا، کیا دیکھتا ہے کہ لوگ استقبال اور صفائی میں مصروف ہیں۔ بادشاہ ہارون الرشید نے اپنی بیوی سے کہا کہ دیکھ لیا بادشاہی، کیسی استقبال کی جارہی ہے؟

بیوی نے کہا: آپ نے پوچھا بھی ہے کہ یہ آپ کی استقبال ہو رہی ہے یا کسی اور کی؟ ہارون الرشید نے کہا اور کون ہے میرے سیوا؟ بادشاہ تو میں ہی ہو۔ بیوی کہنی لگی آپ پوچھو تو صحیح۔ بادشاہ جب آگے بڑھا اور ایک بابا سے پوچھا کہ کس کی استقبال کی جارہی ہے؟ کون آرہا ہے؟ بادشاہ اور خلیفہ تو میں ہو؟

Loading...

اسلام میں اخلاقیات کا مقام ….!

بابا کہنے لگا: مجھے پتہ بھی نہیں کہ آپ بادشاہ ہے یا نہیں؟ یہ استقبال تو اس ہستی کی کی جارہی ہے جو ہمارے دلوں پر بادشاہت کر رہا ہے، اور وہ ہے قرآن اور حدیث کا صحیح عالم امام احمد بن حنبل ؒ ۔

ہارون الرشید بادشاہ حیران ہوگیا اور کہنے لگا کہ آج مجھے پتہ چلا کہ اصل بادشاہی علماء حق کی ہے جو لوگوں کے دلوں پر بادشاہت کر رہے ہیں۔

(Visited 64 times, 1 visits today)
loading...
Advertisements

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں