پی ٹی آئی حکومت کی 2 سالہ کارکردگی کا جائزہ …!

پی ٹی آئی حکومت
Loading...

جولائی 2018 کے عام انتخابات میں پی ٹی آئی کے چئیرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان نے اکثریت حاصل کرنے کے بعد حکومت کی باگ دوڑ سنبھالی۔

اس وقت ملک پاکستان کی حالت نہایت ابتر تھی، گذشتہ حکومتوں نے ملکی معیشت کو تباہ کر دیا تھا۔موجودہ حکومت کی پالیسی اور بنیادی مقاصد نے پھر سے ملکی حالات کو مستحکم کر دیا۔

پی ٹی آئی حکومت کا مقصد فلاحی ریاست کا قیام ہے، احتساب ،انصاف، میرٹ اور پسماندہ طبقے کی ترقی وزیر اعظم کے بنیادی مقاصد میں شامل ہیں۔ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت کو معاشی مشکلات کے ساتھ ساتھ اندرونی اور بیرونی کئی چیلنجز کا سامنا رہا۔ ملک پاکستان کو اندھیروں سے نکال کر روشنی میں لانے کے لئے پی ٹی آئی حکومت نے سر توڑ محنت کی، وزیر اعظم عمران خان اور ان کے وزرا کی محنت رنگ لائی اور ملک ترقی کی جانب گامزن ہوا۔

افغانستان میں قیام امن کے لئے پاکستان نے اہم کردار ادا کیا، مسئلہ کشمیر کو بین الاقوامی سطح پر عمران خان نے اٹھایا اور دنیا نے مقبوضہ کشمیر پر پاکستان کا موؤقف تسلیم کیا۔ وزیراعظم نے دنیا کے سامنے پاکستان کا موؤقف بھرپو رانداز میں پیش کیا،پاکستان کے دوسرے ممالک کے ساتھ تعلقات میں استحکام کو مزید فروغ دیا۔ افریقی ممالک سے تجارتی اشتراک اور باہمی تعلقات کی بہتری پر بھی توجہ دی۔

Photo : File

عمران خان نے ملک پاکستان کی کمزور معیشت کو سہارا دیا، مشکل حالات میں بڑے فیصلے کئے اور ماضی کے قرضوں کا بوجھ بھی ہلکا کیا، حکومت نے ایکسپورٹ بڑھانے کے لئے مراعات بھی دیں۔ملکی تاریخ میں پہلی بار ملکی اخراجات میں کمی ہوئی۔ 20 ارب کا کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ تھا اور ڈیفالٹ کا خدشہ تھا لیکن عالمی مالیاتی ادارے اور دوست ممالک کی مدد سے حالات بہتر کئے گئے۔بیرونی خسارے 20 ارب تھے جو کم ہو کر 3 ارب رہ گئے ہیں۔

ٹیکس نظام میں بہتری لانے کے لئے حکومت نے بہترین کا کئے۔ تقریبا اڑھائی سو ارب روپے کورونا متاثرین میں تقسیم کئے گئے،

File Photo

حکومت نے بلا تعصب ایک کروڑ پاکستانیوں کو امداد دی۔ دو سال کے دوران حکومت نے 5 ہزار ارب روپے کے قرضے واپس کئے اور شعبہ زراعت کے فروغ کے لئے 280 ارب روپے کا پیکج بھی دیا۔

حکومت نے ٹیکسس کی شرح کو کم کر کے تعمیراتی شعبے کے لئے پیکج کا اعلان کیا، کفایت شعاری پالیسی کے تحت مختلف اداروں کو ضم کیا۔ملک سے اسمگل شدہ فون ختم کر دئے گئے۔دو سالوں میں سیمنٹ کی سیل میں 41 فیصد اضافہ ہوا اور ایکسپورٹ گروتھ 6 فیصد رہی۔ کورونا وائرس کے دوران کاروباری شعبے کو حکومت نے ریلیف دیا، چھوٹے کاروباروں کے تین ماہ کے بل معاف کئے اور ودہولڈنگ ٹیکس میں کمی لائی۔

Loading...

معیشت کو بہترین بنانا پی ٹی آئی حکومت کی اولین ترجیح رہی،کورونا وائرس کی وجہ سے معیشت کو دھچکا لگا، بل گیٹس نے جب پاکستان اور انڈیا کا کورونا کیسسز کے متعلق موازنہ کیا تو پاکستان کی حکمت عملی کی تعریف کی۔حکومت کی کامیاب پالیسیوں کے باعث کورونا پر قابو پایا گیا، بروقت فیصلے کئے گئے دیہاڑی دار اور مستحق افراد کو ریلیف دیا گیا۔

احساس پروگرام کے تحت تقریبا 80 ہزار افراد کو ہر ماہ بلا سود قرض کی فراہمی کا پروگرام شروع کیا گیا۔ وزیر اعظم کا کامیاب جوان پروگرام بھی احساس پروگرام کا حصہ ہی ہے جس کے تحت نوجوانوں کو میرٹ پر 1 لاکھ سے 50 لاکھ تک کا قرضہ دیا گیا۔

Photo: File

پی ٹی آئی حکومت نے نیا پاکستان ہاؤسنگ منصوبہ بھی شروع کیا ،اس منصوبے سے 50 لاکھ گھر بے گھر لوگوں کو فراہم کئے جائیں گے جس پر کام جاری ہے۔ وزیر اعظم نے گلیوں، بازاروں اور پارکون میں کھلے آسمان تلے سونے پر مجبور افراد کے لئے پناہ گاہ کا تصور پیش کیا،اہم مقامات پر پناہ گاہیں بھی بنائیں گئیں۔

نیا پاکستان
Photo: File

حکومت نے ماحولیاتی تبدیلیوں کے اثرات کو کم کرنے کے لئے جنگلات کے رقبے بڑھائے اور وسیع و عریض رقبے پر جنگلات کی بحالی کے لئے اقدامات اٹھائے۔ حکومت نے کلین اینڈ گرین منصوبے پر کام کیا تا کہ ماحولیاتی آلودگی کے ذریعے ہونے والی موسمی تبدیلیوں سے بچاؤ ممکن ہو سکے۔

وزیراعظم عمران خان کے دو سال: حکومتی کارکردگی کیسی رہی..؟

کرتار پور راہداری کھولنا حکومت کا سب سے بڑا اقدام ہے،اسے پوری دنیا نے سراہا اور حکومت نے احترام مذاہب کے حوالے سے پوری دنیا کو مثبت پیغام دیا۔

Photo: File

وزیر اعظم پاکستان عمران خان نے سعودیہ عرب اور ایران کے درمیان تصفیہ کروایا جبکہ اسی دوران امریکہ اور ایران کے مابین بھی تعلقات میں بہتری کے لئے کوششیں کیں گئیں جس سے عالمی سطح پر پاکستان کا وقار بلند ہوا۔

پاک بھارت کشیدگی کے دوران وزیر اعظم عمران خان کی قیادت میں پاک فوج کی جانب سے بھارتی پائلٹ ابھی نندن کو گرفتار کئے جانے کے باوجود دشمن ملک بھارت کو واپس کر دیا اس بردباری اور تحمل کی تاریخ انسان میں مثال تک نہیں ملتی۔ اس امر سے پاکستان کے وقار کو چار چاند لگ گئے۔

ابھی نندن
Photo:File
(Visited 33 times, 1 visits today)
loading...
Advertisements

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں