مراد علی شاہ کی اسد عمر سے ملاقات، کراچی کی بہتری کیلیے رابطہ کمیٹی بنانے پر اتفاق

مراد علی شاہ
Loading...

کراچی والوں کے مسئلے حل کر نے کے لیے عمران خان کی وفاقی حکومت اور بلاول کی سندھ حکومت نے امید کی کرن دکھادی، ساتھ مل کر کام کرنے کی ٹھان لی۔

عمران خان احتساب کویقینی بنانے کےلیے پرعزم ہیں، فواد چوہدری

کراچی والوں کو گھروں پر صاف پانی ملے گا، ٹینکرمافیا سے نجات ملے گی،گٹر کے گندے پانی سے جان چھوٹ جائے گی، کوڑا کرکٹ ٹھکانے لگایا جائے گا،نالوں کو صاف کیا جائے گا،بارشوں کے بعد سڑکوں پر پانی کھڑا نہیں ہوگا،لوکل ٹرین کا پہیہ چلے گا اور ائیر کنڈیشنڈ بسیں سڑکوں پر دوڑیں گی۔

وفاقی وزیر اسد عمر نے کراچی والوں کو خوشخبری سنا دی ،کب،کیا،کیسے ملے گا دو ہفتوں میں سب بتانے کی یقین دہانی بھی کرادی۔

وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ، وزیر بلدیات ناصر شاہ، وزیر تعلیم سعید غنی، وفاقی وزراء اسد عمر، علی زیدی اور امین الحق پر مشتمل کمیٹی بھی بن گئی جو سب کاموں پر نظر رکھے گی۔

سندھ میں وفاقی حکومت کے پروجیکٹس سے متعلق رابطوں کے لیے وفاقی اور صوبائی نمائندوں کی کوآرڈینیشن کمیٹی قائم کردی گئی۔

ترجمان وزیراعلیٰ سندھ کے مطابق مراد علی شاہ کی اسلام آباد میں پاکستان تحریک انصاف(پی ٹی آئی) سے تعلق رکھنے والے  وفاقی وزراء اسد عمر، علی زیدی اور متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم)کے امین الحق سے ملاقات ہوئی ہے۔

ترجمان وزیراعلیٰ کے مطابق ملاقات میں صوبائی وزیر بلدیات سندھ ناصر حسین شاہ اور وزیر تعلیم سعید غنی کے علاوہ چئیرمین نیشنل ڈیزاسٹر منیجمنٹ اتھارٹی(این ڈی ایم اے)  نے بھی شرکت کی۔

ترجمان کے مطابق وفاقی نمائندوں اور صوبائی نمائندوں کی ملاقات کے بعد اجلاس ہوا جس میں کوآرڈینیشن کمیٹی پر اتفاق کرلیا گیا۔

ترجمان کا کہنا ہے کہ کمیٹی میں سندھ حکومت کی جانب سے وزیراعلیٰ سندھ، ناصر حسین شاہ اور سعید غنی شامل ہوں گے  جب کہ وفاقی حکومت کی طرف سے کمیٹی میں اسد عمر ، علی زیدی اور امین الحق شامل ہوں گے۔

 وزیراعلیٰ سندھ کے ترجمان کے مطابق کمیٹی سندھ میں وفاقی حکومت کے پروجیکٹس سے متعلق رابطہ رکھے گی۔

کراچی کے 6 مسئلوں پر مل کر کام کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، اسد عمر

اس حوالے سے وفاقی وزیر منصوبہ بندی اور کمیٹی کے رکن اسد عمر نے کہا ہے کہ کراچی کےمسائل حل کرنے کیلئے وفاقی حکومت پہلےبھی کام کرتی رہی اور آگے بھی کرے گی۔

اسد عمر نے کہا کہ  ہمارے نظام میں مختلف حکومتی اداروں کے اپنے اپنے اختیارات ہیں، ضروری ہے کہ تمام صوبائی حکومتیں مل کر آپس میں کام کریں، سندھ حکومت کےساتھ اختلافات اپنی جگہ لیکن ترقیاتی کاموں کیلئے اختلافات نہیں۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ بارشوں کی صورتحال پیداہوئی تووزیراعظم نےاین ڈی ایم اے کو کراچی بھیجا تاکہ مشکلات کا حل نکالا جائے، این ڈی ایم اےکے جانےکے بعد کراچی میں پانی کھڑا ہونے کے کم مسائل سامنے آئے۔

loading...

انہوں نے کہا کہ پاکستان کی معیشت کو اچھا کرنے کے لیے کراچی کی مشکلات حل کرنا ہوں گی، کراچی کے 6 مسئلوں پر مل کر کام کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، کراچی سرکلر ریلوے (کےسی آر) اس فہرست میں شامل ہے کیونکہ یہ کراچی کا ایک اہم شعبہ ہے۔

اسد عمر نے بتایا کہ کےالیکٹرک اور نیپراکے ساتھ مل کر بجلی کے مسئلے کو حل کریں گے، کےالیکٹرک سےشکایت ہےلیکن مسئلوں کو حل کرنے کیلئے ان کےساتھ مل کرکام کرنا ہوگا، اگلے سال کی سپلائی میں اضافہ کرنے کے لیے نیشنل گرڈ کے لیے کام کیا جا رہا ہے۔

وفاقی وزیر منصوبہ بندی نے کہا کہ کراچی کی بہتری کیلئے ہونے والا یہ معاہدہ احتسابی عمل میں بالکل اثر انداز نہیں ہوگا، سب سے زیادہ ٹیکس دینے والے شہرکی حالت دیکھ کرافسوس ہوتا ہے،6 رکنی کمیٹی بنادی گئی ہے جو باہمی اتفاق سے کراچی کے مسائل کو حل کرے گی۔

انہوں نے کہا کہ ہم دو ہفتے کے اندر وفاقی اور صوبائی منصوبوں کی فہرست کو شارٹ لسٹ کریں گے، منصوبوں کی لیڈ، فنانس ریسورس، قانونی تبدیلیوں کو 2 ہفتوں کے اندر حل کیا جائے گا، سندھ میں پی ایم ڈی سی کی لیڈ لے کر کام کرنا شروع کر دیں گے، ہفتے کے روز کراچی میں ہماری ملاقات ہوگی،اگلے دو ہفتوں میں واضح حکمت عملی سامنے آجائے گی۔

اسد عمر نے کہا کہ بےشک سیاسی تحفظات ہیں لیکن اس کا احتسابی عمل سےکوئی تعلق نہیں ،  سوال نہیں پیدا ہوتا کہ احتسابی عمل پر سمجھوتا کیا جائے کیونکہ وزیراعظم کاواضح نظریہ ہے، ساتھ مل کرعوام کی بہتری کے لیے ہم کام کرتے رہیں گے۔

انہوں نے کہا کہ سیاست چلتی رہےگی لیکن کراچی کی عوام کی ترقی کیلئےکوئی سیاست نہیں، سندھ کے اندر احتجاج ہو بھی رہے ہیں تو وہ ایسے ہیں جن کی نہ آواز ہے نہ وہ نظر آرہے ہیں۔

ٹرانسپورٹ،کےفور، گرین لائن، بلیولائن،ایس تھری ان تمام مسئلوں پربات ہوئی، امین الحق

اس موقع پر ایم کیو ایم کے رکن قومی اسمبلی اور وفاقی وزیر برائے انفارمیشن اینڈ ٹیکنالوجی امین الحق نے کہا کہ کراچی جاگتا ہے تو پورا ملک سکون سے سوتا ہے، وفاقی حکومت کے شکر گزار ہیں کہ این ڈی ایم اےکو کراچی روانہ کیا۔

امین الحق نے کہا کہ کمیٹی بنا دی ہے اور اس کاکام صوبائی اور وفاقی حکومت کے درمیان پل کا کردار ہے، ٹرانسپورٹ، کےفور، گرین لائن، بلیو لائن، ایس تھری ان تمام مسئلوں پربات ہوئی ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ملک کے وسیع ترمفاد میں کراچی کے لیے ہم مل کر بیٹھیں گے، کراچی کےعوام اور نمائندگان کی ایک ہی خواہش ہےکہ کراچی کوبہترکیا جائے، خرابیاں بالکل نظرآئی ہیں جس وجہ سے وفاق کو  مسئلےحل کرنے کیلئے شامل کیا گیا۔

کراچی اٹھے گا تو پورا پاکستان معاشی طور پر اٹھے گا،علی زیدی

وفاقی وزیر برائے بحری امور علی زیدی نے کہا کہ کراچی جیسے شہر کو  فنانس کے نہیں بلکہ ٹرانسپیرنسی کے مسئلے ہوتے ہیں، یہ کمیٹی اس لیے بن رہی ہے تاکہ ٹرانسپیرنسی کو یقینی بنایا جائے۔

علی زیدی نے کہا کہ  کراچی اٹھے گا تو پورا پاکستان معاشی طور پر اٹھے گا۔

خیال رہے کہ 2 روزل قبل بھی کراچی کے مسائل کو حل کرنے کے لیے شہر کی تین بڑی سیاسی جماعتوں کی اسلام آباد اور کراچی میں دو اہم ملاقاتیں ہوئی تھیں جن کا مقصد کراچی میں انفرا اسٹرکچر کی بہتری کے کاموں کو آگے بڑھانا تھا۔

(Visited 23 times, 1 visits today)
Loading...
Advertisements

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں