کرونا وائرس ختم ہو گا یا نہیں ..؟ نئی تحقیق سامنے آگئی..

 دنیا بھر میں کرونا وائرس سے مرنے والوں کی تعداد 3 لاکھ 24 ہزار 958 ہوگئی ہے گذشتہ روز سب سے زیادہ 1552 افراد امریکا میں ہلاک ہوئے۔ برطانوی ماہرین نے کرونا وائرس کے متعلق ایک اور حیران کن انکشاف کردیا ہے. ان ماہرین کا کہنا ہے کہ ایک بہت ہی کامیاب وائرس ہے.

ہم اس کو کامیاب وائرس اس لئے کہتے ہیں کہ اس میں ایک شخص سے دوسرے شخص میں منتقل ہونے کی صلاحیت بہت تیز ہے اور اس طرح یہ آگے سے آگے منتقل ہوتا رہتا ہے.

یونیورسٹی آف گلاسگو کے سربراہ پروفیسر ڈاکٹر رابرٹسن نے کہا کہ اس سے پہلے جو ایبولا وائرس پھیلا تھا اس نے بہت سے لوگوں کو ہلاک کیا تھا. ایبولا وائرس میں منتقل ہونے کی صلاحیت اتنی تیز نہیں تھی اس لیے ایبولا وائرس پر قابو پا لیا گیا تھا.

لیکن کرونا وائرس سے ایک ایسا خطرناک وائرس ہے بہت سے لوگ اس کا شکار بھی ہیں اور وہ اس بات سے بالکل بے خبر ہیں کہ وہ اس وائرس میں مبتلا ہو چکے ہیں. کیونکہ ان لوگوں میں اس وائرس کی بظاہر کوئی علامت نظر نہیں آتی اور بہت سے لوگ بہت سی معمولی علامات کے ساتھ اس سے متاثر ہیں.

ان پیشوں سے وابستہ افراد کرونا وائرس کا جلدی شکار ہوتے ہیں ….!

ڈاکٹر رابرٹسن کا کہنا ہے کہ ہمیں اس بات کے لئے تیار ہونا چاہیے کہ ہم اس وائرس کو ختم نہیں کر سکتے کچھ عرصے بعد یہ ایک عام وائرس بن جائے گا اور لوگ اس کے عادی ہوجائیں گے.

ان ماہرین کا کہنا ہے کہ پریشان کن بات یہ ہے کہ جو لوگ ایبولا وائرس کا شکار ہوئے تھے وقت کے ساتھ ان لوگوں میں پیدا کرنے والی اینٹی باڈیز ختم مدافعت پیدا کرنے والی اینٹی باڈیز ختم ہو گئی تھیں۔

اب ہمیں اس بات کا خطرہ ہے کہ جو لوگ کرونا سے متاثر ہیں ان لوگوں میں بھی اگر اینٹی باڈیز ختم ہوگئی تو اس سے بڑا نقصان ہوگا.

(Visited 24 times, 1 visits today)

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں