کرونا وائرس کی ایک اور نئی علامت سامنے آگئی… !

گلوبلائزیشن
Loading...

سپین میں کرونا وائرس پر کی گئی ریسرچ میں اس وائرس کی ایک اور نئی علامت سامنے آئی ہے. ماہرین کا کہنا ہے کہ سے کرنا سے متاثرہ شخص میں زکام اور بخار کے علاوہ منہ میں چھالے اور خراش بھی ہو سکتی ہے. کرونا وائرس کے کچھ ایسے مریض سامنے آئے ہیں جن کے منہ میں خراش تھی اور بعد میں چھالے نکل آئے تھے.

جب ان لوگوں کا کرونا ٹیسٹ کروایا گیا تو وہ پازیٹو آیا لیکن ان لوگوں میں کرونا وائرس کی اور کوئی علامت موجود نہیں تھی. دوسرے وائرسز کی طرح کرونا وائرس بھی انسان کے منہ کے اندر کھال کو متاثر کرتا ہے جس کی وجہ سے منہ میں خراش ہونے لگتی ہے اور پھر چھالے بن جاتے ہیں.

Loading...

کرونا سے صحتیاب ہونے والے کتنے عرصے تک دوبارہ اس کا شکار نہیں ہوسکتے …؟

چھالے نکل آنے کی وجہ سے مریض کے لیے کھانا پینا بہت مشکل ہو جاتا ہے. گذشتہ ریسرچز میں یہ بات سامنے آئی تھی کہ کرونا وائرس سے کچھ مریضوں کے چہرے کی جلد پر چکن پاکس اور چیچک جیسے باریک باریک دانے اور داغ ظاہر ہوتے ہیں لیکن حالیہ تحقیق میں نہ صرف اس کی تصدیق کی گئی ہے بلکہ کرونا وائرس کی پرانی علامات میں ایک نئی علامت کا بھی اضافہ کیا ہے۔

(Visited 77 times, 1 visits today)
Loading...
Advertisements

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں