سابق اٹارنی جنرل انور منصور نے تحریری معافی نامہ سپریم کورٹ میں جمع کرا دیا

انور منصور

اسلام آباد: سابق اٹارنی جنرل انور منصور نے متنازع بیان کے معاملے پر سپریم کورٹ میں تحریری معافی نامہ جمع کروا دیا۔

انور منصور خان نے تحریری بیان میں کہا ہے کہ عدلیہ کا بے حد احترام کرتا ہوں، غیر مشروط معافی مانگ کر اپنا بیان واپس لیتا ہوں۔ واضح رہے کہ سابق اٹارنی جنرل نے سپریم کورٹ میں اعلی عدلیہ سے متعلق نامناسب الزامات عائد کئے تھے جن سے حکومت نے فوری طور پر لاتعلقی کا اظہار کیا تھا جبکہ وفاقی وزیر قانون فروغ نسیم نے انور منصور کے الزامات کو مسترد کر دیا تھا۔

وفاقی حکومت کی جانب سے استعفی طلب کئے جانے پر انورمنصور نے گزشتہ روز صدر مملکت عارف علوی کو اپنا استعفی بھجوا دیا تھا۔ سپریم کورٹ نے اٹارنی جنرل سے کہا تھا کہ وہ بینچ سے متعلق اپنے بیان پر یا تو ثبوت پیش کریں یا معافی مانگیں۔

loading...

خالد جاوید کو اٹارنی جنرل لگانے کا فیصلہ، وزیراعظم کی سمری بھجوانے کی ہدایت

ججز کے خلاف الزام لگانے پر وفاقی حکومت نے اٹارنی جنرل آف پاکستان انور منصور خان سے استعفیٰ لے لیا اور اٹارنی جنرل کے موقف سے لاعلمی اور لاتعلقی کا اظہار کیا ہے۔ حکومت نے خالد جاوید خان کو نیا اٹارنی جنرل مقرر کرنے کی منظوری دے دی ہے۔

وفاقی وزیر قانون فروغ نسیم، وزیراعظم عمران خان،صدر عارف علوی اور معاون برائے احتساب شہزاد اکبر کی جانب سے سپریم کورٹ میں جواب جمع کرایا گیا جس میں کہا گیا کہ ہم عدالتوں کا احترام کرتے ہیں اور انور منصور خان نے بلااجازت سپریم کورٹ میں یہ بیان دیا۔

(Visited 15 times, 1 visits today)

Comments

comments

انور منصور,

اپنا تبصرہ بھیجیں