اتار چڑھاؤ کرکٹرز کے کیریئر کا حصہ ہوتے ہیں، سرفراز احمد

سرفراز احمد

لاہور: سینٹرل کنٹریکٹ میں تنزلی کے باوجود سرفراز احمد کا حوصلہ جوان ہے۔

میچز کے دوران تماشائیوں کی وجہ سے ایک الگ ماحول ہوتا ہے، عمران طاہر

پی سی بی پوڈ کاسٹ میں سرفراز احمد نے کہا کہ میرا ہدف سینٹرل کنٹریکٹ کی کیٹیگریزنہیں بلکہ قومی کرکٹ ٹیم میں کم بیک ہے کیونکہ کسی بھی چیز کا حصول آسان مگر اسے برقرار رکھنا مشکل ہوتا ہے، میرے لیے کنٹریکٹ کی اے، بی یا سی کیٹیگری معنی نہیں رکھتی۔

انھوں نے کہا کہ اتار چڑھاؤ کرکٹرز کے کیریئر کا حصہ ہوتے ہیں، میں ہر حال میں اللہ تعالیٰ کا شکر ادا کرتا ہوں، بی کیٹیگری بھی اچھی اور اس میں بھی کئی اسٹارپلیئرز شامل ہیں،میری کوشش ہے کہ جب بھی قومی ٹیم میں واپسی کا موقع ملے تو عمدہ کارکردگی سے اپنی جگہ پکی کر لوں، اس کے لیے فارم اور فٹنس پر کام کر رہا ہوں۔

loading...

سرفراز نے کہا کہ شاہین شاہ آفریدی نے تینوں فارمیٹ میں مسلسل اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے، گذشتہ سال ورلڈکپ میں بھی انھوں نے اپنی بولنگ سے متاثر کیا، نوجوان پیسر بلاشبہ سینٹرل کنٹریکٹ میں اے کیٹیگری کے حقدار تھے۔ یاد رہے نئے سینٹرل کنٹریکٹ میں سرفراز احمد کی ایک درجہ تنزلی ہوئی، ان کی جگہ شاہین شاہ آفریدی نے ٹاپ کرکٹرز میں بابر اعظم اور اظہر علی کو جوائن کیا ہے۔

سابق کپتان نے کہا کہ امید ہے کہ پیسر اپنی کارکردگی میں تسلسل برقرار رکھتے ہوئے قومی ٹیم کی فتوحات میں اہم کردار ادا کرتے رہیں  گے۔

(Visited 13 times, 1 visits today)

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں