سعودی عرب کا اقامہ رکھنے والوں کے لیے اچھی خبر آگئی

Loading...

سعودی عرب میں کرونا وائرس کی وجہ سے بیرون ملک سے لوگوں کی آمد کا سلسلہ ابھی تک بحال نہیں ہوا جبکہ مملکت میں موجود غیر ملکیوں کی ان کی مرضی سے مرحلہ وار خصوصی پروازوں کے ذریعے واپسی کا سلسلہ جاری ہے۔

عرب میڈیا کے مطابق ایوان شاہی کی جانب سے تارکین کے لیے خصوصی مراعات کا اعلان ہونے کے بعد وہ افراد جو چھٹی پر وطن گئے گئے ہوئے تھے مگر 20 مارچ کے بعد پروازوں پر پابندی کی وجہ سے دوبارہ مملکت نہیں آ سکے ان کے اقاموں اور خروج و عودہ کی مدت میں 3 ماہ کی توسیع کے احکامات صادر ہو چکے ہیں جن پر عمل درآمد جاری ہے۔

بیرون ملک پھنس جانے والے تارکین کے اقاموں اور خروج و عودہ کی مدت میں 3 ماہ کی توسیع عارضی ہے اگر اس دوران حالات نارمل ہو گئے اور پروازوں پر عائد پابندی ختم ہو گئی تو باہر گئے ہوئے تارکین کی واپسی کا اعلان کر دیا جائے گا۔

ایوان شاہی کی جانب سے تارکین کے اقاموں اور خروج و عودہ کے حوالے سے دی جانے والی شاہی مراعات کے بارے میں سوشل میڈیا پر مختلف سوالات پوچھے گئے۔

ایک صارف نے سوال کیا ہے ’میں سعودی عرب میں ہوں میرا اقامہ دو دن بعد ایکسپائر ہو جائے گا کیا میرا اقامہ حالیہ اعلان کے تحت تجدید ہوگا؟

Loading...

جس کے جواب میں سعودی حکام کا کہنا تھا کہ گزشتہ دنوں ایوان شاہی سے جن مراعات کا اعلان کیا گیا تھا وہ صرف ان تارکین کے لیے ہے جوچھٹی پر مملکت سے باہر گئے ہوئے ہیں اور ان کا خروج وعودہ یا اقامہ ایکسپائر ہورہا تھا مگر حالیہ کورونا وائرس کی وجہ سے بین الاقوامی پروازوں پر عائدپابندی کےسبب وہ مملکت نہیں آ سکے تھے۔

عمران خان کی سمارٹ لاک ڈاؤن پالیسی کو دنیا بھر میں سراہا جا رہا ہے، وزیر خارجہ

ایوان شاہی کی جانب سے دی جانے والی مراعات سے بیرون مملکت گئے ہوئے تارکین ہی مستفید ہو سکتے ہیں جبکہ وہ غیر ملکی جو سعودی عرب میں موجود ہیں ان کے لیے حالیہ دی جانے والی مراعات نہیں ہیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ اقامہ ختم ہونے سے قبل فوری طور پرتجدید کرا لیں وگرنہ اقامہ کی عدم تجدید پرجرمانہ عائد ہو گا اس لیے اقامہ کی مدت میں توسیع کر لیں تاکہ جرمانے سے بچ سکیں۔

ایک اور صارف نے دریافت کیا کہ’جو لوگ چھٹی آئے ہوئے ہیں اور ان کی چھٹی ختم ہو گئی ہے کیا وہ واپس جا سکتے ہیں، نئے ویزے کے بارے میں کیا اطلاعات ہیں؟

حکام کا کہنا تھا کہ سعودی عرب میں ابھی تک بیرون ملک سے آنے والی پروازوں پر عائد پابندی ختم نہیں ہوئی تاہم شاہی احکامات کے تحت تمام غیر ملکی جو چھٹی پرمملکت سے باہر گئے ہوئے تھے ان کے اقاموں اور خروج و عودہ کی مدت میں 3 ماہ کے لیے بغیر اضافی فیس کے توسیع کے احکامات صادر ہوچکے ہیں جن پر مرحلہ وار عمل درآمد جاری ہے۔

(Visited 27 times, 1 visits today)
Loading...
Advertisements

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں