ٹرمپ کو بتا دیا ایران کے ساتھ جنگ تباہ کن ہو گی، وزیراعظم

وزیراعظم

وزیراعظم عمران خان سوئٹزرلینڈ کے شہر ڈیووس میں بعد عالمی اقت8صادی فورم سے خطاب کررہے ہیں۔

اپنے خطاب میں وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ قائد اعظم پاکستان کو ایک اسلامی فلاحی ریاست بنانا چاہتے تھے تاہم جب میں بڑا ہوا توبرطانیہ جانے تک مجھے نہیں پتا تھا کہ ایک فلاحی ریاست کیسی ہوتی ہے۔

وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ میں نے سوچ لیا تھا کہ جب بھی مجھے موقع ملا میں پاکستان کو ایک فلاحی ریاست بناؤں گا اور اب یہی میرا وژن ہے کہ ایسی حکومت ہو جو کمزور طبقے کی فکر کرے۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ پاکستان قدرتی مناظر سے مالامال ہے اور اس کو بچانے کے لیے ہم نے ختم کیے گئے جنگلات کی دوبارہ بحالی کے اقدامات کیے ہیں اور خیبر پختونخوا میں ہم نے ایک بلین درخت لگائے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم بننے کے بعد میں نے فیصلہ کیا ہے کہ آئندہ 4 سالوں میں 4 بلین درخت لگائے جائیں گے۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ دیگر ممالک کی طرح پاکستان بھی ماحولیاتی مسائل سے دوچار ہے اور شہروں میں ہونے والی آلودگی خاموش قاتل بن چکی ہے۔

loading...

ملکی معیشت کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان کا کہنا تھا کہ ملک میں امن واستحکام تک ہم معاشی ترقی نہیں کرسکتے۔ ان کا کہنا تھا کہ 1980 کی دہائی میں شروع ہونے والےافغان جہاد کے اختتام کے بعد عسکری تنظیمیں ہمارے پاس رہ گئیں جس کے مضر اثرات کا ہمیں سامنا کرنا پڑا، اسلحے اور منشیات کے کلچر نے ہمیں متاثر کیا۔

وزیراعظم عمران خان ورلڈ اکنامک فورم کے اجلاس میں شرکت کے لیے 3 روزہ دورے پر گزشتہ روز ڈیووس پہنچے تھے۔ وزیر اعظم عمران خان ورلڈ اکنامک فورم سے خطاب میں پاکستان میں سرمایہ کاری اور کاروباری مواقع پربات کریں گے۔

خیال رہے کہ وزیراعظم عمران خان  نے دورے کے دوسرے روز مختلف ممالک کے سربراہان مملکت اور عالمی اداروں کے صدور سے ملاقاتیں کیں۔

گزشتہ روز وزیراعظم عمران خان نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے ملاقات کی تھی جس میں دونوں مسئلہ کشمیر اور افغانستان پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

(Visited 16 times, 1 visits today)

Comments

comments

وزیراعظم,

اپنا تبصرہ بھیجیں