ایسے لوگوں میں کرونا وائرس کی شدت زیادہ ہوسکتی ہے ….!

کورونا وائرس

امریکہ میں کرونا وائرس پر کی جانے والی تحقیق میں اس بات کا انکشاف ہوا ہے کہ جو لوگ موٹاپے کا شکار ہوتے ہیں. ان میں کرونا وائرس سے متاثر ہونے کے شدت کافی حد تک بڑھ جاتی ہے.

ماہرین نے پہلے اس بات کا انکشاف کیا تھا کہ جو لوگ دائمی امراض کا شکار ہوتے ہیں ان میں کرونا وائرس کی شدت بڑھ جاتی ہے. لیکن اب ماہرین کا کہنا ہے کہ جو لوگ دل کی اور پھیپھڑوں کی بیماریوں کا شکار ہوتے ہیں ان کی نسبت کرونا وائرس ان لوگوں کے لیے زیادہ خطرناک ہوتا ہے جو موٹاپے کا شکار ہوں.

ماہرین کا کہنا ہے کہ امریکہ میں کرونا وائرس سے مرنے والوں کی تعداد اس لیے زیادہ ہے کیونکہ وہاں کی 40 فیصد آبادی موٹاپے کا شکار ہے.

loading...

عالمی ادارہ صحت نے کہا تھا کہ جن لوگوں کی عمر 60 سال سے زیادہ ہے ان میں کرونا وائرس کا خطرہ زیادہ ہوتا ہے لیکن اب اس نئی تحقیق سے یہ بات ثابت ہوئی ہے جو لوگ موٹاپے کا شکار ہوتے ہیں ان میں ہسپتال پہنچنے کے امکانات دوگنا زیادہ بڑھ جاتے ہیں.

کرونا کے مریض سے کتنا فاصلہ رکھیں نئی ریسرچ سامنے آگئی ….!

کرونا وائرس موٹے افراد کے لئے بہت خطرناک ہے اس لئے ان لوگوں کو چاہیے کہ وہ زیادہ احتیاط کریں اپنے ہاتھوں کو بار بار دھوئیں سینیٹائزر کا استعمال کریں اور باہر جاتے ہوئے اپنے چہرے پر ماسک ضرور لگائیں.

ریسرچ میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ انسان کی عمر اور اگر وہ پہلے سے کسی بیماری کا شکار ہے تو یقیناً کرونا وائرس کی شدت اور موت کی پیشگوئی کے لیے اہم ہیں مگر موٹاپے کے شکار افراد میں اس کا خطرہ زیادہ ہوتا ہے۔

(Visited 34 times, 1 visits today)

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں