وائرس جسم کے اس حصے میں 21 دن تک زندہ رہ سکتا ہے….!

کرونا وائرس سے دنیا بھر میں لاکھوں افراد متاثر ہیں اور لاکھوں کی تعداد ہی میں لوگ زندگی کی بازی ہار چکے ہیں. امریکہ جیسا سپر پاور ملک کرونا وائرس کے سامنے بے بس ہو چکا ہے.

کرونا وائرس کے متعلق ماہرین نئے نئے انکشافات کرتے رہتے ہیں. ماہرین نے کرونا وائرس کے متعلق ایک اور نیا انکشاف کیا ہے. ان کا کہنا ہے کہ انسانی کے جسمانی اعضاء میں سے انسان کی آنکھ ایسا حصہ ہے جہاں پر کرونا وائرس کافی عرصے تک زندہ رہ سکتا ہے. اس بات کا انکشاف برطانوی خبر رساں ادارے نے اپنی رپورٹ میں کیا ہے. ان کا کہنا ہے کہ مارچ کے مہینے میں کچھ ایسے افراد سامنے آئے جن کی آنکھیں شدید سرخ ہوگئی تھی اور آنکھوں میں جلن بھی تھی.

جب ان افراد کا کرونا ٹیسٹ کیا گیا تو وہ مثبت آیا. کرونا وائرس کی عام علامات نزلہ کھانسی بخار اور جسم میں درد ہے. لیکن مارچ کے مہینے میں آنکھوں کا سرخ ہونا کرونا وائرس کی ایک نئی علامت ظاہر ہوئی تھی.

Photo: File
Photo: File

حیران کن بات یہ ہے کہ جن لوگوں کی آنکھوں میں کرونا وائرس کی علامات ظاہر ہوئی تھی جب 21 دن بعد ان کا دوبارہ جائزہ لیا گیا تو وائرس 21 دن بعد بھی ان کی آنکھوں میں موجود تھا.

loading...

کرونا کی وجہ سے لوگوں میں خاموشی سے کونسی نئی بیماری جنم لے رہی ہے. … ؟

رپورٹ میں اس بات کا دعوی کیا گیا ہے کہ بظاہر صحت مند نظر آنے والا شخص بھی کرونا وائرس کا شکار ہوسکتا ہے اور بہت سے ایسے کیس سامنے آچکے ہیں.

ماہرین کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس دیگر جسمانی اعضاء  کی نسبت آنکھ میں طویل عرصے تک زندہ رہتا ہے.

(Visited 122 times, 1 visits today)

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں