کووڈ19 صرف پھیپھڑوں کی بیماری نہیں ہے….!

کووڈ19
Loading...

برطانیہ میں کووڈ19 سے متعلق کی جانے والی ریسرچ میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ اب کرونا وائرس خون کی گردش کے نظام کو متاثر کر رہا ہے.

خون کا نظام متاثر ہونے کی وجہ سے ہلاکتیں بھی ہو رہی ہیں. کووڈ19 سے پہلے جو سارس وائرس آیا تھا اس نے بھی متاثرہ لوگوں کے خون میں جماؤ پیدا کرنا شروع کر دیا تھا.

برٹش ہارٹ فاؤنڈیشن کا کہنا ہے کہ اسی طرح کرونا وائرس سے بھی خون جمنا شروع ہو جاتا ہے اسی لئے یہ صرف پھیپھڑوں اور سانس کی بیماری نہیں ہیں بلکہ خون کے جمنے کا عمل بھی ہے. ماہرین یہ بھی کہتے ہیں کہ کرونا وائرس میں بلڈ کلاٹنگ ایک بہت ہی نمایاں عنصر ہے۔ جب کرونا وائرس سے بلڈ کلاٹنگ ہوتی ہے تو چوٹ لگنے سے بھی خون نہیں نکلتا.

کچھ ماہرین کی تحقیقی رپورٹس کرونا وائرس کے اثرات کو اعصابی مسائل ، پیروں میں درداوع ناک سرخ ہونے اور جسم میں سوجن سے مربوط کرتی ہیں.

loading...

سپین میں کرونا کے 50 فیصد سے زائد مریض اس بیماری میں مبتلا ہورہے ہیں…!

کرونا وائرس سے خون جمنے کی وجہ سے متاثرہ لوگ دل کے امراض میں مبتلا ہو رہے ہیں اور اس کے علاوہ جو لوگ شوگر اور موٹاپے کا شکار ہیں ان میں ہارٹ اٹیک اور فالج کا خطرہ زیادہ بڑھ رہا ہے.

اس کے علاوہ ماہرین کا یہ بھی کہنا ہے کہ کرونا وائرس سے انسان کے ہارمونز کا توازن بھی خراب ہو سکتا ہے. جس کی وجہ سے مریض اس سے جسمانی مسائل کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے.

ماہرین نے خبردار کیا ہے کہ ہم نے کسی دوسرے وائرس سے اتنا زیادہ اور تیزی سے خون جمنے کا عمل اس سے پہلے کبھی نہیں دیکھا ہے.

(Visited 32 times, 1 visits today)
Loading...
Advertisements

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں