وزیراعظم کا شوگر کمیشن رپورٹ پر ایف بی آر، نیب، ایف آئی اے کو تحقیقات کا حکم

شوگر کمیشن رپورٹ
Loading...

اسلام آباد: وزیراعظم نے شوگر مافیا کیخلاف کریک ڈاؤن کا بڑا فیصلہ کرتے ہوئے شوگر کمیشن رپورٹ پر ایف بی آر، نیب، ایس ای سی پی، ایف آئی اے کو تحقیقات کا حکم دے دیا۔

وزیراعظم عمران خان کی ہدایت پر مشیر احتساب و داخلہ شہزاد اکبر نے خطوط ارسال کیے، گورنر سٹیٹ بینک، مسابقتی کمیشن اور تین صوبوں کو بھی خط لکھ دیے گئے۔ خطوط کیساتھ شوگر کمیشن رپورٹ بھی بھجوا دی گئی۔

کرپشن قوانین کا مقصد کسی کو ناجائز تنگ کرنا نہیں، شاہ محمود قریشی

وفاقی حکومت نے 90 روز میں عمل درآمد رپورٹ پیش کرنے کا کہہ دیا۔ وفاقی کابینہ نے 23 جون کو ایکشن پلان کی منظوری دی تھی۔ ایف بی آر کو ملک بھر کی تمام شوگر ملز کا آڈٹ کرنے کی بھی ہدایت کر دی گئی۔

خط کے متن میں کہا گیا کہ ایف بی آر شوگر ملز کی بے نامی ٹرانزیکشنز کی تحقیقات کرے، نیب شوگر کمیشن کے نتائج کی روشنی میں زمہ داران کا تعین کرے۔ نیب کو شوگر ملز اور مالکان کے مالی معاملات کی تحقیقات کا کہہ دیا گیا۔

Loading...

کمیشن کو شوگرکارٹل کی ذخیرہ اندوزی اور یوٹیلٹی اسٹورز پرچینی کی عدم فراہمی کی تحقیقات کی ہدایت کی گئی ہے۔

وفاقی حکومت نے خط میں کہا ہے کہ شوگر ملز مالکان کی جانب سے تاخیری حربے اپنائے گئے، حکومت نے شوگر مافیا کی جانب سے بلیک میل کرنے کی کوشش ناکام بنا دی۔

حکومت کا مؤقف ہے کہ شوگر کمیشن رپورٹ آنے کے بعد ملز مالکان نے عدالتوں میں چیلنج کر دیا تھا، معاملہ عدالتوں میں زیر سماعت ہونے کے باعث تاخیر کا باعث بنا۔

(Visited 39 times, 1 visits today)
Loading...
Advertisements

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں