ان بلڈ گروپس کے لوگ کرونا وائرس سے زیادہ متاثر ہو رہے ہیں ….؟

بلڈ ٹیسٹ

اٹلی اور چین سے شروع ہونے والا خطرناک کرونا وائرس اب پاکستان بھی آ چکا ہے۔ دنیا بھر کے ماہرین اس وائرس کو شکست دینے کے لئے کوششیں کر رہے ہیں۔

بین الاقوامی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق کرونا وائرس کو روکنے اور اس وائرس کی ویکسین تیار کرنے کے لیے ماہرین صرف مختلف ریسرچز کرنے میں مصروف ہی نہیں بلکہ وہ یہ وجہ بھی تلاش کرنا چاہتے ہیں کہ آخر یہ وائرس کس بلڈ گروپس کے لوگوں کو زیادہ جلدی متاثر کرتا ہے ؟

ریسرچ میں مصروف ماہرین کے مطابق اگر ان کو اس کی بنیادی وجہ کو معلوم کرنے میں کامیابی مل جاتی ہےتو ان کے لئے یہ ویکسین بنانا بہت ہی آسان ہو گا۔چائنہ کے ماہرین نے اس وائرس سے متاثر لوگوں کے بلڈ کے نمونے جمع کئے اور وائرس کے حملے کی وجوہات کو معلوم کیا۔

تحقیق کے دوران چینی ماہرین اس نتیجے پر پہنچے ہیں کہ کرونا وائرس کے ان بلڈ گروپس رکھنے والے افراد کو  متاثر کرنے کے امکانات زیادہ ہوتے ہیں، ان میں A پازیٹیو اور A نیگیٹو گروپ کے لوگ شامل ہیں۔

چینی ماہرین نے بتایا کے دنیا بھر میں کرونا کے جو کیس پورٹ ہوئے ہیں ان میں سے زیادہ تر افراد یہی دو بلڈ گروپ رکھتے ہیں۔

خطرناک وائرس اور ان کی علامات ….

ماہرین کی رپورٹ کے مطابق ریسرچ کے دوران 2 ہزار سے زیادہ افراد کے خون کے نمونے اور ان کی تمام تفصیلات حاصل کیں، ان مریضوں میں سے زیادہ تر کا بلڈ گروپ A پازیٹیو یا A نیگیٹو تھا۔

ماہرین کی ریسرچ رپورٹ میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ O پازٹیو اور نگیٹیو بلڈ گروپس کے لوگ وائرس سے سب سے کم متاثر ہوئے۔

یاد رہے یہ ریسرچ ایک بین الاقوامی ویب سائٹ پر پبلش کی گئی ہے۔ اس ویب سائٹ کا نام MedRxiv ہے.

(Visited 215 times, 1 visits today)
loading...

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں