عالمی ادارہ صحت کا کرونا وائرس کا علاج دریافت کرنے کے لئے ریسرچ کا اعلان

اوسلو: عالمی ادارہ صحت نے کورونا وائرس کا علاج دریافت کرنے کے لئے ریسرچ کا آغاز ناروے سے کرنے اعلان کر دیا ہے۔

سولیڈیرٹی ٹرائل میں ملیریا، ایبولا، ایڈز اور ہیپاٹائٹس کے علاج میں استعمال ہونی والی ادویات کے کرونا کے مریضوں پر اثرات کا جائزہ لیا جائے گا۔ ڈبلیو ایچ او کے مطابق سولیڈیرٹی ٹرائل کا آغاز ناروے کے دارالحکومت اوسلو کے 22 ہسپتالوں سے ہوگا۔ ریسرچ میں کرونا کے مریضوں پر اچھے اثرات مرتب کرنے والی دواؤں کے استعمال کا جائزہ لیا جائے گا۔

ریسرچ کے دوران کورونا کے مریضوں کو ملیریا، ایبولا، ایڈز اور ہیپاٹائٹس کے علاج میں استعمال ہونے والی دوائیں مختلف مراحل میں دی جائیں گی۔

چین میں صحت یاب ہونے والوں کے ٹیسٹ پھر پازیٹیو کیوں آنے لگے …..؟

مختلف ممالک میں ان دواؤں کے کورونا وائرس کے کچھ مریضوں پر اچھے نتائج سامنے آئے تھے۔ ان تجربات کا دائرہ کار دنیا کے مختلف ممالک تک بڑھایا جائے گا۔

تحقیق میں شامل ہسپتال آنلائن پورٹل کے ذریعہ عالمی ادارہ صحت کو دوا کے اثرات سے متعلق آگاہ کرتے رہیں گے۔

عالمی ادارہ صحت کے ڈائریکٹر جنرل نے جنیوا میں ویڈیو کانفرنس میں صورتحال کو عالمی المیہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ یاد رکھنا ہو گا کہ دنیا میں ہزاروں افراد اس سے نجات پانےمیں بھی کامیاب ہوئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اس وقت دنیا بھر میں طبی عملے کو ضروری سامان پہنچانا ایک سنگین مسئلہ ہے، چوہتر ممالک کو سامان بھیج چکےہیں، مزید ساٹھ ممالک میں سامان بھیجنے کی تیاری کی جا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کرونا کی ویکسین کی تیاری میں بارہ سے اٹھارہ ماہ لگ سکتے ہیں۔

(Visited 26 times, 1 visits today)
loading...

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں