کرونا وائرس کا مردوں کی جنسی طاقت پر کیا اثر ہوتا ہے ۔۔۔ ؟

جنسی طاقت
Loading...

کرونا وائرس کے متعلق ابھی تک کوئی نہ کوئی حیران کن تحقیق سامنے آتی رہتی ہے۔ ماہرین پہلے بھی اس گذشتہ تحقیقات میں خبردار کر چکے ہیں کہ کرونا وائرس خواتین کی نسبت مردوں کے لیے زیادہ خطرناک ثابت ہوتا نظر آرہا ہے۔

ترکی کے ماہرین نے اب ایک نئی ریسرچ کے ذریعے ایک اور حیران کن انکشاف کیا ہے۔ یونیورسٹی آف میریسن کے ماہرین نے کہا ہے کہ کرونا وائرس مردوں کی جنسی طاقت کا سب سے بڑا دشمن ہے ۔

مردوں میں ایک ہارمون ٹیسٹاسٹرون موجود ہوتا ہے ماہرین نے اس بات کا انکشاف کیا ہے کہ کرونا وائرس اس ٹیسٹاسٹرون نامی ہارمون کو اپنی خوراک بناتا ہے اور اس ہارمون سے اپنی افزائش میں اضافہ کرتا ہے۔

مردوں کے جسم میں کرونا وائرس کو وافر خوراک ملتی ہے۔ جس سے وائرس کی افزائش ہوتی ہے اس لیے مردوں پر خوانین کی نسبت کرونا وائرس کا حملہ شدید اور طاقتور ہوتا ہے۔

Loading...

ریسرچ رپورٹ کے مطابق ترکی کے ماہرین کا کہنا ہے کہ ٹیسٹاسٹرون نامی ہارمونز کو استعمال کرتے ہوئے کرونا وائرس مردوں کے مداقعتی نظام کو کمزور کر دیتا ہے جس سے مردوں کے جسمانی اعضاء آسانی سے ناکارہ ہوسکتے ہیں۔

منفی سوچ رکھنے والے لوگوں کے متعلق بری خبر آگئی…..!

ریسرچ پیش کرنے والے ماہرین کا کہنا ہے کہ ہمارے سامنے کرونا سے متاثرہ ایسے مرد بھی آئے ہیں جو اپنی جنسی طاقت مکمل طور پر کھو چکے ہیں اور جب ان کے ہارمون کا جائزہ لیا گیا تو ان میں ٹیسٹاسٹرون ہارمون انتہائی کم لیول میں موجود تھا۔

اس کے علاوہ ماہرین کا کہنا ہے کہ ہماری تحقیق میں شامل 91 فیصد کورونا سے متاثر مردوں کے جسم میں ٹیسٹاسٹرون کی مناسب مقدار پیدا ہونا کم ہوگئی تھی.

(Visited 84 times, 1 visits today)
Loading...
Advertisements

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں