ڈاکٹروں کی نواز شریف کو کورونا سے بچنے کے لیے آئسولیشن اختیار کرنے کی ہدایت

نواز شریف

اسلام آباد: احتساب عدالت میں سابق وزیر اعظم نواز شریف کی میڈیکل رپورٹ جمع کرا دی گئی۔

رپورٹ کے مطابق ڈاکٹروں نے نواز شریف کو کرونا وائرس کے خدشہ کے پیش نظر سیلف آئسولیشن میں رہنے کی ہدایت کی ہے۔

نواز شریف کی میڈیکل رپورٹس 5 صفحات پر مشتمل ہے جو برطانیہ میں پاکستانی ہائی کمیشن سے تصدیق شدہ ہیں۔ یہ رپورٹس 18 مارچ کو جاری کی گئی ہیں، جن کی روشنی میں معلوم ہوا ہے کہ نواز شریف نے سوئیٹزرلینڈ کے کچھ ڈاکٹرز کی خدمات بھی حاصل کی ہیں۔ نواز شریف کو اسی ماہ چیک اپ کے لیے جانا تھا لیکن کرونا وائرس کی وبا کی وجہ سے نہیں جا سکے۔

میڈیکل رپورٹس میں کہا گیا ہے کہ نواز شریف شوگر اور گردوں سمیت دیگر بیماریوں میں مبتلا ہیں، ان کی صحت تاحال خراب ہے، ان کے دل کو خون پہنچانے والی شریانیں مکمل فعال نہیں، بہتر علاج کے لیے وہ برطانیہ میں ہی رہیں، ڈاکٹروں نے نواز شریف کو ہدایت کی ہے کہ کرونا وائرس سے بچنے کے لیے آئسولیشن اختیار کریں کیونکہ مختلف بیماریوں کی وجہ سے ان پر کورونا وائرس زیادہ جلدی اثرانداز ہو سکتا ہے۔

کورونا وائرس سے متاثر وزیر تعلیم سندھ سعید غنی صحتیاب

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ میاں نواز شریف عمر کے ایسے حصے میں ہیں جس میں کرونا سے متاثر ہونے کا خدشہ ہے، انہیں وباء کے خطرے کے سبب ہسپتال نہیں لے جایا جاسکتا، نواز شریف کے دل کے معائنے کے لیے یونیورسٹی ہسپتال جنیوا سے وقت لیا گیا تھا۔

میڈیکل رپورٹس میں کہا گیا کہ کرونا کی وجہ سے نواز شریف کے دل کی ادویات کی مقدار بڑھا دی گئی ہے، سابق وزیراعظم کی شریانیں تنگ ہوچکی ہیں جس کے لیے کیتھرائزیشن کی ضرورت ہے۔

(Visited 19 times, 1 visits today)

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں