May 9, 2021

آج کل

Daily Aajkal News site

دنیا کے بلند ترین چیلنجنگ ٹریک اور ہائک کونسے ہیں؟ جانئیے

پہاڑوں میں ایک ایسی طاقت موجود ہے جو ہماری حوصلہ افزائی کرنے کے ساتھ ساتھ ہمیں چیلنج بھی کرتی

ہے۔ اونچیائی پر چڑھنا دلچسپ بھی ہے اور ایک ہمت والا کام بھی ہے۔ اور اگر آپ پہاروں کی اونچائی اور

اس پر چڑھنے یا اس کی چوٹی سر کرنے کی خواہش رکھتے ہیں تو آئیے ہم آپ کو یہاں دنیا کی سب سے مشکل

چیلنجوں اور ٹریک کا ایک نظارہ کرواتے ہیں۔

Bright Angel Trail, Arizona :روشن فرشتہ ٹریل ، ایریزونا

ہمارے پاس جو فہرست موجود ہے اس کے لحاظ سے ایسے لگتا ہے کہ یہ واحد نام ہے جو سننے اور بولنے میں آسان لگتا ہے مگر صرف ایسا ہی ہے۔ یہ گرینڈ وادی نیشنل پارک میں 15 کلومیٹر کا فاصلہ ہے ، جو دیکھنے میں تو آسان معلوم ہوتا ہے لیکن یہاں کا درجہ حرارت 37 ڈگری سینٹی گریڈ تک بڑھ سکتا ہے۔ اس کے نتیجے میں بہت سے افراد یہاں کے سفر کی  تیاریاں نہیں کرتے ہیں کیونکہ گرمی کی وجہ سے انہیں بہت سی مشکلات  کا سامنا ہو سکتا ہے۔

Ciudad Perdida, Colombia:سیواد پردیڈا ، کولمبیا

اس جگہ کا ٹریک تقریبا 4000 فٹ تک ہے اور اسے مکمل کرنے میں لگ بھگ ایک ہفتے کا وقت درکار ہونا چاہئیے۔ یہاں کا ٹریک بہت تنگ لین پر ہے لیکن یہاں دیگر چیلنجز بھی ہیں۔ جنوبی امریکہ کا موسم اکثر غیر متوقع ہوتا ہے۔ یہ اندازہ لگایا گیا ہے کہ خشک موسم میں دریا عبور  کرنا بہت مشکل ہوتا ہے کیونکہ اس کی گہرائی میں اضافہ ہو جاتا ہے، لیکن  بارش کے موسم میں پانی کی سطح ٹھیک ہو جاتی ہے جس سے تیراکی کرنا آسان ہو جاتا ہے۔

Snowman Trek, Bhutan:سنو مین ٹریک ، بھوٹان

سنو مین کا نام بھی سننے میں بہت خوبصورت لگتا ہے لیکن آپ کو یہ نہیں لگتا کہ یہ سنو مین بنانا اس سے بھی زیادہ آسان ہے۔کیا آپ یہ تصور کر سکتے ہیں کہ یہ کتنا بڑا چیلنج ثابت ہو سکتا ہے۔اس کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ اس پر چڑھنے والے 50 فیصد لوگوں کو ناکامی کا سامنا ہوتا ہے۔سنومین نیپال میں سب سے مشکل چڑھنے والا ٹریک ہے جسے سر کرنا سردیوں کے مہینوں میں تقریبا ناممکن ہے۔لیکن سردیوں میں ایسا کرنے سےآپ خوبصورت نظاروں سے ضرور لطف اندوز ہونگے۔

Mount Kilimanjaro, Tanzania, Africa :پہاڑ کلیمنجارو ، تنزانیہ ، افریقہ

پہاڑ کلیمنجارو دنیا کی سب سے براہ راست اور چیلنجنگ ٹریک میں سے ایک ہے۔اس کے راستے پر اونچائی کی وجہ سے لوگوں کو عام طور پر پریشانی کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔اس پہاڑ کا راستہ تقریبا 36 کلومیٹر کی پیدل مسافت اور پانی کے ذخیرے سے سرسبز جنگلات سے ہوتے ہوئے گلیشیر تک لے جاتا ہے۔ اگر کسی کو کوئی سنجیدہ مسئلہ پیش نہ آئے تو یہ ٹریک ایک ہفتے میں مکمل کرسکتا ہے۔

Everest Base Camp, Nepal :ایورسٹ بیس کیمپ ، نیپال

ایورسٹ بیس کیمپ کو اس فہرست میں شامل دیکھ کر آپ کو زیادہ تعجب نہیں ہونا چاہئیے۔ یہ دنیا کی سب سے مشکل چڑھائی میں سے ایک ہے۔ اسے مکمل ہونے میں زیادہ سے زیادہ دو ہفتوں کا وقت لگتا ہے۔صرف وقت ہی چیلنج نہیں ہے بلکہ بہتی ہوئیں ندیاں، برف پوش پہاڑی چوٹیاں اور ناہموار خطے کی وجہ سے چڑھنا بھی بہت مشکل ہوتا ہے۔ تاہم ، یہ کہا جاسکتا ہے کہ ایک بار پہاڑوں کو چھوٹا کردیا جائے تو یہ نظارہ یقینا قابل دید ہوگا۔

Paine Circuit Trek, Torres del Paine, Chile:پین سرکٹ ٹریک، ٹورس ڈیل پین، چلی

یہ سلسلہ تقریبا 75 میل کے فاصلے پر پھیلا ہوا ہے جو آپ کو دنیا کے خوبصورت پہاڑوں میں سے ایک پر لے جائے گا۔ ایک مشکل سفر جسے 8 سے 9 دن درکار ہوںگے چڑھنے کیلئے اور آپ اس کی چڑھائی کے دوران ایک ہی وقت میں چاروں سیزن کا تجربہ حاصل کر سکتے ہیں۔اس پر چڑھنے کے بارے میں دلچسپ بات یہ ہے کہ یہ ایسے ہی ہے جیسے آپ تقریبا 90 ڈگری پر اوپر چڑھ رہے ہوں۔

Kalalau Trail, Kauai, Hawaii:کالاؤ ٹریل ، کاؤئی ، ہوائی

اس کی بلندی تقریبا 5000 فٹ ہے اور یہ تقریبا 22 میل کی دوری پر واقع ہے۔ ٹریکروں کیلئے یہ ایک پسندیدہ امر ہے کیوں کہ یہ ایک نہایت ہی پُرجوش مقام جو نوپالی کوسٹ ساحل تک کی رسائی سے ملتا ہے ۔ ٹریکرز اور کوہ پیماؤں کے لئے سب سے زیادہ مشکل یہ ہے کہ اس کا زیادہ تر راستے پر بارش اور کیچڑ کی وجہ سے پھسلن ہو جاتی ہے۔اس کی چڑھائی کے مکمل راستے میں مدد کرنے کیلئے کوئی گائیڈر موجود  نہیں ہوگا۔