آج کل

رمضان المبارک میں ہاضمے کو کیسے بہتر بنایا جا سکتا ہے؟

رمضان المبارک میں روزے رکھنے کی وجہ سے اکثر لوگوں کا معدہ اپ سیٹ ہو جاتا ہے جسکی وجہ روزہ نہیں ہوتا ہوتا بلکہ ان کی غذا ہوتی ہے۔ہم آپ کو بتائیں گے کہ چند غذاؤں کو اپنا کر آپ اپنے کمزور ہاضمے کو کیسے مضبوط بنا سکتے ہیں۔آپ غذا سے اسی وقت لطف اندوز ہوسکتے ہیں جب نظام ہاضمہ کے مسائل کا سامنا نہ ہو، دوسری صورت میں پیٹ پھولنے اور دیگر تکالیف اس تجربے کو تکلیف دہ بنا دیتے ہیں۔

گرمی کی وجہ سے جسم میں پانی کی کمی کو کیسے دور کیا جا سکتا ہے؟

بس کھانے سے پہلے ان عادات کو اپنا لیں، جو نظام ہاضمہ کو کافی حد تک بہتر بنا سکتی ہیں۔


صحت مند جسم میں نظام ہاضمہ بہتر بنانے کے لئے پانی کی مناسب مقدار کا ہونا بہت ضروری ہے۔ پانی نہ صرف ٹھوس غذا کو ہضم ہونے میں مدد دیتا ہے بلکہ ضروری اجزاءکو مناسب طریقے سے جذب بھی کرتا ہے۔ طبی ماہرین کے مطابق کھانے سے آدھا گھنٹہ پہلے پانی پینے سے نظام ہاضمہ کی رفتار بڑھ جاتی ہے، جبکہ کھانے کے درمیان پانی پینے سے معدے کی تیزابیت پر منفی اثرانداز ہوتا ہے۔

کھیرے بھی وٹامنز، منرلز، اینٹی آکسائیڈنٹس اور ورم کش خصوصیات رکھتے ہیں، اس میں موجود فائبر اور پانی کی مقدار سے قبض کی روک تھام ہوتی ہے، اس میں موجود اینٹی آکسائیڈنٹس اس زہریلے مواد کی روک تھام کرتی ہے جو کہ بدہضمی اور معدے کے انفیکشن کا باعث بنتا ہے۔
دہی نظام ہاضمہ کے لیے بہت زیادہ فائدہ مند ہے مختلف طبی تحقیقی رپورٹس میں یہ بات سامنے آچکی ہے کہ دہی کھانے کی عادت ہیضے اور معدے کے دیگر امراض سے تحفظ فراہم کرتی ہے۔

سبز چائے اینٹی آکسائیڈنٹس سے بھرپور مشروب ہے جو نہ صرف جسم میں ورم کو کم کرتا ہے بلکہ میٹابولزم کو بھی فوری حرکت میں لاتا ہے۔ تو کھانے سے آدھے گھنٹے پہلے اس مشروب کو پینا ہر غذا کو ہضم ہونے میں مدد دیتا ہے۔

کیلا ایک ایسا پھل ہے جو فائبر سے بھرپورہے جبکہ اس میں موجود دیگر اجزا بھی آنتوں کے افعال بہتر بنانے کے ساتھ کاربوہائیڈریٹ ہضم کرنے میں مدد دیتے ہیں، روزانہ ایک کیلا کھانا نظام ہاضمہ کو بہتر بنانے کے لیے کافی ہے۔

سیب وٹامنز، منرلز اور غذائی فائبر سے بھرپور پھل ہے ۔ سیب سے معدے میں صحت کے لیے فائدہ مند بیکٹریا کی افزائش ہوتی ہے جس سے بھی نظام ہاضمہ بہتر ہوتا ہے۔

گرم مصالحے میں استعمال ہونے والا زیرہ اینٹی آکسائیڈنٹ، جراثیم کش مسالحہ ہے اور یہ ہاضمے کے مختلف امراض پر قابو پانے میں بھی مدد دیتا ہے، اسے غذا کا حصہ بناکر استعمال کرنا نظام ہاضمہ کو تیز کرتا ہے۔

ادرک کا تمام کھانوں میں عام استعمال ہوتا ہے اور یہ نظام ہاضمہ کے لیے بھی بہترین ہے، ادرک چربی اور پروٹین کو ہضم ہونے میں مدد دیتی ہے، اس کا چھوٹا سا ٹکڑا چبا لینے سے نظام ہاضمہ تیز ہو جاتا ہے۔

سونف غذائی نالی کو سکون پہنچاتی ہے، جس سے گیس خارج ہوتی ہے اور پیٹ پھولنے کا عارضہ کم ہوتا ہے۔ اسے پھانک لیں یا چائے کی شکل میں کھانے کے بعد پی لیں۔

شکرقندی قبض کی شکایت کو ختم کرنے کے لیے بہترین ہے جو کہ پانی، فائبر، میگنیشم اور وٹامن بی سکس سے بھرپور ہوتی ہے، میگنیشم آنتوں کو ریلیف پہنچا کر ان کی قدرتی حرکت کو بحال کرتی ہے، جبکہ پانی اور فائبر جسمانی نمی کو برقرار رکھتے ہیں جبکہ فضلے کو جسم سے باہر نکال دیتے ہیں۔

Leave a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *