پاکستان میں اپوزیشن کے فون ہیک کرانے میں نواز شریف نے مودی کو خدمات فراہم کیں، فرخ حبیب

پاکستان میں اپوزیشن کے فون ہیک کرانے میں نواز شریف نے مودی کو خدمات فراہم کیں، فرخ حبیب

فیصل آباد: وزیر مملکت اطلاعات و نشریات فرخ حبیب نے کہا ہے کہ نواز شریف کے دور اقتدار میں بطور اپوزیشن لیڈر عمران خان کا فون ہیک کیا گیا، نواز شریف اور مریم صفدر جواب دیں کہ عمران خان کا ہی فون کیوں ہیک کیا گیا؟، یہ عین ممکن ہے کہ نواز شریف نے مودی کے ذریعے اسرائیلی سافٹ ویئر سے عمران خان کا فون ہیک کرایا ہو کیونکہ سابق وزیراعظم کی تاریخ رہی ہے کہ وہ سیاستدانوں ،جرنیلوں، ججز ،اینٹیلی جنس اداروں کے سربراہان کے فون ٹیپ کراتے رہے ہیں۔

منگل کو سرکٹ ہائوس فیصل آباد میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر مملکت نے کہا کہ مودی اور نواز شریف کا تعلق گہرا ہے ،جیسے مودی فون ریکارڈ کرا رہے تھے، پاکستان میں اپوزیشن کے فون ہیک کرانے میں نواز شریف نے مودی کو خدمات فراہم کیں، نواز شریف کی مودی سے اتنی گہری دوستی تھی کہ مودی کے حلف نامے پر یہ حریت راہنمائوں سے نہیں ملتے۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان اپوزیشن میں تھے تو تب بھی پانامہ لیکس اور دیگر کرپشن سکینڈلز پر آواز بلند کرتے رہے۔ انہوں نے کہا کہ فون ہیک کرنے کے معاملے کی تفصیلات آرہے ہیں ، جلد بہت سے کردار بھی بے نقاب ہو جائیں گے۔ اب تک سامنے آنے والی تفصیلات کے مطابق نواز شریف نے مودی کے ذریعے عمران خان کا فون ٹیپ کرایا ہے۔ نواز شریف اگر اپنی اپوزیشن کے فون ہیک کرا سکتے ہیں تو کسی کے بھی فون ہیک کراسکتے ہیں۔ جب نواز شریف وزیراعظم تھے تو انھیں عمران خان نے ہی کرپشن سکینڈلز پر چیلنج کیے ہوئے تھے۔

ان کا کہنا تھا کہ اس وقت عمران خان ملک کے وزیراعظم نہیں تھے، مودی اور نواز شریف کا جس طریقے سے آپس کا تعلق تھا اور مودی اپوزیشن کے فون ہیک کرا رہا تھا اسی طرح نواز شریف نے اپوزیشن کے فون ہیک کرانے کے لئے مودی کی خدمات لیں اور اسرائیلی سافٹ ویئر کے ذریعے عمران خان کا فون ٹیپ کرایا گیا۔

فرخ حبیب نے کہا کہ نواز شریف نے اپنے دور حکومت میں تمام قوانین کو بالائے طاق رکھتے ہوئے 100لوگوں کے ہمراہ مودی کا لاہور آنا، نواز شریف کی فیملی کی شادی کا حصہ بننا ، یہ سب کچھ سامنے ہے ۔ پیپلز پارٹی اور دیگر سیاسی قیادت کے فون ہیک نہیں کرائے گئے صرف عمران خان کا فون ہیک کرایا گیا اس پرنواز شریف کو اپنی پوزیشن واضح کرنا پڑے گی۔

انہوں نے کہا کہ آجکل نواز شریف کی صاحبزادی کشمیر میں جاکر الیکشن مہم چلا رہی ہے لیکن مودی کے مظالم اور آر ایس ایس کا ذکر مریم صفدر کی زبان پر نہیں آرہا ، مریم یہ تو بتائے کہ فون ہیک کرانے پر جو گٹھ جوڑ سامنے آیا ہے اس میں نواز شریف کا کیا عمل دخل ہے ، ان سوالات کے جوابات درکار ہیں۔ وٹس ایپ پر چونکہ رسائی ممکن نہ تھی اس لئے اسرائیلی سافٹ ویئر کی مدد حاصل کی گئی، نواز شریف حکومت کے وزیر دفاع کے بھی اسرائیل سے تعلقات تھے اس میں ان کی مدد بھی شامل ہوگی۔ نواز شریف کے عزائم جان چکے ہیں ،یہ ملک دشمنی کرتے رہے ہیں۔

Leave a Reply