کیا آپ نے کبھی سوچا ہے ہمارے ہاتھ میں یہ لکیریں کیوں ہوتی ہیں…؟

لکیریں

انسان کا جسم مختلف اعضاء سے مل کر بنا ہوا ہے۔ انسانی جسم کے ہر عضو کی بناوٹ ایک دوسرے سے مختلف ہوتی ہے اور اللہ تعالی نے انسان کے جسم کی کوئی بھی چیز فالتو نہیں بنائی ہر چیز کی کوئی نہ کوئی وجہ ضرور ہے۔

اگر آپ غور سے اپنے ہاتھ کو دیکھیں تو ہاتھ کی ہتھیلی کے اوپر آپ کو بے شمار لکیریں نظر آتی ہیں کیا آپ نے کبھی یہ سوچا ہے کہ یہ لکیریں کیوں ہیں اور ان کی کیا وجہ ہے؟ ہمارے ہاتھ کی ہتھیلی میں موجود یہ لکیریں اگر نہ ہوں تو ہم اپنا ہاتھ کو ہلا بھی نہیں سکتے یعنی ہمارا ہاتھ بالکل بھی حرکت نہیں کرسکے گا۔

انسان کے ہاتھ کی جلد اتنی موٹی اور سخت ہوتی ہے کہ اگر ہاتھ کی لکیریں نہ ہو تو آپ اپنا ہاتھ کھول ہی نہیں سکتے اور نہ ہی بند کر سکتے ہیں۔ ہم اپنے ہاتھ کی لکیروں کی وجہ سے ہی اپنے ہاتھ کو بند کر سکتے ہیں کھول سکتے ہیں اور کوئی چیز پکڑ سکتے ہیں۔

loading...

ایسا ممکن صرف ہاتھ کی لکیروں کی وجہ سے ہی ہے اگر ہاتھ میں کوئی لکیر نہ ہو تو انسان اپنے ہاتھ کی مٹھی بند نہیں کر سکتا ہاتھ کی ان لکیروں کو پارلمر فلیکس کریز بھی کہا جاتا ہے۔

ماہرین نے گالیاں دینے کے حیران کن فوائد بتا دیئے …!

یہ وہ شکنیں ہوتی ہیں جو دوران حمل ماں کے پیٹ میں بننا شروع ہوجاتی ہیں اور جب بچہ پیدا ہوتا پہلے تو یہ لکیریں اس کی ہتھیلیوں پر بھی پڑھنا شروع ہوجاتی ہیں.

یہی وجہ ہے کہ جب بچے کی پیدائش ہوتی ہے تو یہ لکیریں ہتھیلی پر موجود ہوتی ہیں ان کا کام ہاتھ کی ہتھیلی کی جلد کو پھیلانے اور سکڑنے میں مدد دینا ہوتا ہے اور اس کی وجہ سے ہی ہمارا ہاتھ مختلف پوزیشن میں حرکت کرتا ہے۔

(Visited 305 times, 2 visits today)

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں