کم عمر میں دل کے امراض ہونے کی وجہ یہ ہے….!

دل کے امراض

ماہرین نے ایک نئی تحقیق میں اس بات کا انکشاف کیا ہے کہ تمباکو نوشی کرنے والے اور نشہ آور ادویات کا استعمال کرنے والے لوگ کم عمر میں ہی امراض قلب میں مبتلا ہو جاتے ہیں.

آج کل نوجوان کی بڑی تعداد دل کے امراض کا شکار ہورہی ہے. چالیس سال کی عمر سے پہلے ہی یہ لوگ اسٹروک اور انجائنا میں مبتلا ہو جاتے ہیں جس سے ان کی صحت کو شدید خطرہ لاحق ہو جاتا ہے. مردوں کے علاوہ خواتین میں بھی یہ امراض تیزی کے ساتھ پھیل رہے ہیں اور ان کی سب سے بڑی وجہ نشہ آور چیزوں کا استعمال ہے.

موت سے پہلے انسان کو کیا نظر آتا ہے ۔۔۔؟

جو شخص تمباکو نوشی کرتا ہے اس کے 60 فیصد سے زائد دل کے امراض میں مبتلا ہونے کے امکانات ہوتے ہیں جب کہ شراب نوشی کرنے والے کے 23% فیصد، کوکین استعمال کرنے والے کے 13 فیصد اور باقی نشہ آور چیزوں کا استعمال کرنے والے لوگوں کے 5 فیصد دل کے امراض میں مبتلا ہونے کے امکانات ہوتے ہیں.

loading...

ماہرین کا کہنا ہے کہ بلڈ پریشر شوگر اور کولیسٹرول کو کنٹرول کرنے کے بعد اگر کوئی شخص سگریٹ نوشی کبھی کبھار کرتا ہے تو اس کے امراض قلب میں مبتلا ہونے کے امکانات میں دو گنا تک مزیداضافہ ہوجاتا ہے اور اگر اس کو معمول بنا لیا جائے تو امراض قلب میں مبتلا ہونے کے امکانات 50 فیصد تک پہنچ جاتے ہیں.

ماہرین نے اس بات پر بھی زور دیا ہے کہ تمباکو نوشی اور نشہ آور چیزوں کے استعمال کو روکنے کے لیے بین الاقوامی سطح پر مہم شروع کرنے کی ضرورت ہے.

اس کے علاوہ کاروباری مراکز تعلیمی اداروں اور مختلف اداروں میں اس طرح کے سیمینار منعقد کئے جانے چاہئیں جہاں لوگوں کو یہ پیغام دیا جائے کہ وہ تمباکو نوشی اور نشہ آور چیزوں کا استعمال ترک کر دیں اور اس کے علاوہ میڈیا کا استعمال کرتے ہوئے تمباکو نوشی کے خلاف مختلف پروگرام پیش کئے جائیں تاکہ لوگوں میں اس کے خطرناک اثرات کے متعلق شعور بیدار ہو اور وہ سگریٹ نوشی کو ترک کر دیں.

(Visited 30 times, 1 visits today)

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں